Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / چندرا بابو کا مقدمات سے نجات کیلئے مرکز کو آندھرا پردیش فروخت

چندرا بابو کا مقدمات سے نجات کیلئے مرکز کو آندھرا پردیش فروخت

عوام کے جذبات کو ٹھیس ، صدر وائی ایس آر سی پی و قائد اپوزیشن جگن موہن ریڈی کا ردعمل
حیدرآباد ۔ 23 ۔ اکٹوبر : ( سیاست نیوز): صدر وائی ایس آر کانگریس پارٹی مسٹر جگن موہن ریڈی نے کہا کہ مقدمات سے بچنے کے لیے چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے آندھرا پردیش کے خصوصی ریاست کے موقف کو فروخت کردیا ہے ۔ مسٹر جگن موہن ریڈی نے کہا کہ امراوتی سنگ بنیاد سے آندھرا پردیش کے 5 کروڑ عوام بیروزگار نوجوان ، طلبہ وغیرہ مکمل طور پر امید تھے تاہم وزیر اعظم نریندر مودی نے عوام کی امیدوں پر پانی پھیر دیا ۔ چندرا بابو نائیڈو بھی وزیر اعظم پر دباؤ بنانے اور عوام کے جذبات سے انہیں واقف کرانے میں پوری طرح ناکام ہوگئے ۔ جگن موہن ریڈی نے کہا کہ سنگ بنیاد تقریب میں شرکت کرنے والے وزیر اعظم نے وعدے کے مطابق آندھرا پردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے کا کوئی اعلان نہیں کیا کم از کم خصوصی پیاکیج کا بھی اعلان نہیں کیا صرف پارلیمنٹ کے احاطے سے مٹی اور یمنا ندی سے پانی دیتے ہوئے آندھرا پردیش کے عوام کو مایوس کردیا ہے ۔ مگر وہ بھول گئے کہ ریاست کی تقسیم کے موقع پر اے پی کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے کا بھی وعدہ کیا گیا تھا ۔ قائد اپوزیشن آندھرا پردیش مسٹر جگن موہن ریڈی نے کہا کہ چیف منسٹر مسٹر این چندرا بابو نائیڈو کئی مقدمات میں پھنسے ہوئے ہیں ان سے باہر نکلنے کے لیے خصوصی ریاست کے موقف کو فروخت کردیا ہے ۔ جس کے خلاف آج ساری ریاست میں وائی ایس آر کانگریس پارٹی کی جانب سے بڑے پیمانے پر احتجاجی مظاہرے کئے گئے ہیں مسٹر جگن موہن ریڈی نے آندھرا پردیش کے عوام سے اپیل کی کہ سب مل کر آندھرا پردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ حاصل کرنے کے لیے متحدہ طور پر کام کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اے پی کو خصوصی ریاست کا درجہ حاصل کرنے کے لیے انہوں نے اپنی زندگی کی پرواہ کئے بغیر 7 دن تک بھوک ہڑتال منظم کی تھی باوجود اس کے مرکزی حکومت نے آندھرا پردیش کے ساتھ کوئی ہمدردی کا اظہار کیا اور نہ ہی نریندر مودی سے کوئی مشاورت کی ہے ۔۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT