Thursday , January 18 2018
Home / شہر کی خبریں / چندر شیکھر راؤ نے اپنے ارکان خاندان کی تفصیلات درج کروائیں

چندر شیکھر راؤ نے اپنے ارکان خاندان کی تفصیلات درج کروائیں

عہدیداروں کی موجودگی میں فارم کی خانہ پری ، سروے سے متعلق عوام میں غلط فہمیوں کو دور کرنے چیف منسٹر مہم میں شامل

عہدیداروں کی موجودگی میں فارم کی خانہ پری ، سروے سے متعلق عوام میں غلط فہمیوں کو دور کرنے چیف منسٹر مہم میں شامل
حیدرآباد۔/19اگسٹ، ( سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے حکومت کے جامع گھر گھر سماجی سروے کے تحت آج اپنے ارکان خاندان کی تفصیلات قواعد کے مطابق عہدیداروں کو درج کرائیں۔ حکومت نے تلنگانہ کے ہر گھر میں عوام کے سماجی اور معاشی موقف کا پتہ چلانے کیلئے آج سروے کا اہتمام کیا تھا۔ سروے میں چیف منسٹر اور ان کے ارکان خاندان کے علاوہ ڈپٹی چیف منسٹرس اور وزراء نے اپنے اپنے مقامات پر سروے میں حصہ لیتے ہوئے عہدیداروں کی موجودگی میں فارم کی خانہ پُری کی۔ سروے کے سلسلہ میں عوام میں پائی جانے والی غلط فہمیوں کے ازالہ کے لئے خود چیف منسٹر نے سروے میں حصہ لینے کا فیصلہ کیا اور کمشنر جی ایچ ایم سی سومیش کمار کی قیادت میں عہدیداروں کی ٹیم نے کیمپ آفس پہنچ کر مذکورہ فارم کی خانہ پُری کی۔ اس موقع پر چیف منسٹر کے علاوہ ان کی شریک حیات، فرزند و ریاستی وزیر کے ٹی راما راؤ، دختر کویتا ( ایم پی ) اور دیگر ارکان خاندان موجود تھے۔ عہدیداروں کی جانب سے فارم کی مکمل خانہ پُری کے بعد چیف منسٹر اور کے ٹی راما راؤ نے جائزہ لیا اور پھر کے سی آر نے صدر خاندان کی حیثیت سے فارم پر دستخط کئے۔ کمشنر جی ایچ ایم سی سومیش کمار کی راست نگرانی میں تفصیلات پر مبنی فارم کی خانہ پُری کی گئی اور چیف منسٹر کے دفتر کے عہدیداروں نے بلدی عہدیداروں کے ساتھ اس کام میں تعاون کیا۔ چیف منسٹر نے فارم پر دستخط کے بعد خود یہ فارم کمشنر بلدیہ کے حوالے کیا۔ اسی دوران چیف منسٹر نے دن بھر وقفہ وقفہ سے عہدیداروں سے سروے کے بارے میں معلومات حاصل کی۔ انہوں نے سروے کیلئے انچارج کے طور پر مقرر کئے گئے عہدیداروں اور ضلع کلکٹرس سے سروے کے موقف اور اس کی رفتار کے بارے میں معلومات حاصل کی۔ عہدیداروں نے چیف منسٹر کو بتایا کہ شام 4بجے تک تلنگانہ کے تمام اضلاع میں 60فیصد سے زائد سروے کا کام مکمل کرلیا گیا اور رات میں کسی بھی صورت میں مابقی سروے مکمل کرلیا جائے گا۔ عہدیداروں نے چیف منسٹر کو تیقن دیا کہ بعض مقامات پر جہاں سروے کے آغاز میں تاخیر ہوئی ہے رات میں زائد عملے کے ذریعہ اس کام کی تکمیل کی جائے گی۔ چیف منسٹر نے اپنے دفتر میں پنچایت راج اور دیہی ترقی کے پرنسپال سکریٹری ریمنڈ پیٹر، محکمہ پلاننگ کے پرنسپال سکریٹری بی پی اچاریہ، سروے کے چیف ایکزیکیٹو آفیسر مرلی اور دیگر عہدیداروں کے ساتھ اجلاس منعقد کیا۔ چیف منسٹر کو بتایا گیا کہ سروے میں حصہ لینے کے سلسلہ میں عوام میں شعور بیداری کے مثبت نتائج برآمد ہوئے ہیں اور بڑی تعداد میں عوام نے رضاکارانہ طور پر نہ صرف سروے میں حصہ لیا بلکہ تمام ضروری معلومات فراہم کی۔ سروے میں حصہ لینے کے سلسلہ میں عوام میں کافی جوش و خروش دیکھا گیا۔ چیف منسٹر نے اعلیٰ عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ وقتاً فوقتاً سروے کی رفتار کے بارے میں ضلع عہدیداروں سے معلومات حاصل کریں اور اس بات کو یقینی بنائیں کہ حکومت کے پروگرام کے مطابق ایک دن میں صد فیصد سروے کی تکمیل ہوجائے۔ انہوں نے عہدیداروں سے کہا کہ معلومات کے حصول کے سلسلہ میں قواعد کے مطابق عوام پر کوئی جبر اور زبردستی نہ کی جائے اس سے عوام میں غیر ضروری شبہات پیدا ہوں گے۔ انہوں نے عہدیداروں سے کہا کہ سروے میں شامل اور اس کی نگرانی کرنے والے عہدیداروں کو چاہیئے کہ وہ عوام پر یہ واضح کردیں کہ اس سروے کا مقصد مختلف فلاحی پروگراموں کے فوائد حقیقی مستحقین تک پہنچانا ہے۔ اس مسئلہ پر چیف منسٹر نے چیف سکریٹری راجیو شرما سے بھی بات چیت کی۔ چیف سکریٹری نے تلنگانہ کے 10اضلاع میں جاری سروے کی رفتار پر اطمینان کا اظہار کیا اور کہا کہ عہدیدار پوری دلچسپی کے ساتھ سروے میں حصہ لے رہے ہیں اور انہیں عوام کی تائید حاصل ہورہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT