Saturday , November 18 2017
Home / جرائم و حادثات / چنچل گوڑہ جیل میں قیدیوں اور وارڈن کے درمیان ہاتھا پائی

چنچل گوڑہ جیل میں قیدیوں اور وارڈن کے درمیان ہاتھا پائی

زیر دریافت قیدیوں سے ملاقات کے لیے آنے والے رشتہ داروں کے ساتھ وارڈن کی زیادتی کی شکایت
حیدرآباد ۔ 16 ۔ ستمبر : ( سیاست نیوز ) : چنچل گوڑہ سنٹرل جیل پھر ایک مرتبہ سرخیوں میں چھا گئی ۔ بتایا جاتا ہے کہ مشتبہ آئی ایس آئی قیدیوں اور وارڈن میں جھگڑا کے بعد وارڈن زخمی ہوگیا ۔ جیل حکام کا کہنا ہے کہ تین مشتبہ قیدی ابراہیم ، الیاس اور رحمن اپنے رشتہ داروں سے ملاقات کے بعد مشتعل ہوگئے اور وارڈن بھرت کے علاوہ جیل اسٹاف پر حملہ کردیا ۔ اس حملہ میں سمپت نامی ملازم کی آنکھ کو نقصان پہونچا ہے ۔ جیل حکام کی جانب سے جاری کردہ بیان میں مذکورہ تینوں زیر دریافت قیدیوں کو جو ہائی سیکوریٹی زمرہ میں پائے جاتے ہیں ان سے ملاقات کے لیے ان کے رشتہ دار آئے تھے اور جب مین گیٹ II پر ان زیر دریافت قیدیوں کے سامان تھے اس دوران زبردستی یہ تین زیر دریافت قیدی اسٹاف کے ساتھ بدسلوکی اور بدکلامی پر اتر آئے اور ان پر حملہ کردیا جیل حکام نے اس مسئلہ کو سپرنٹنڈنٹ سے رجوع کیا ۔ سپرنٹنڈنٹ نے دبیر پورہ پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کروائی ہے ۔ باوثوق ذرائع کے مطابق جھگڑا کی اصل وجہ وارڈن کی زیادتی بتائی جاتی ہے چونکہ جب تینوں مشتبہ قیدیوں کے رشتہ دار ملاقات کے بعد غذائی اشیاء دے کر چلے گئے تو اس اشیاء کی جانچ کی جاچکی تھی تاہم وارڈن جو اس وقت ڈیوٹی پر تھا عمداً ان زیر دریافت حملہ کے الزامات کا سامنا کررہے قیدیوں کے سامنے دوبارہ اس کی جانچ کی ۔ جانچ ضروری ہوتی ہے لیکن دوبارہ کرتے ہوئے کچھ الفاظ کا استعمال کیا اور اس دوران ان زیر دریافت قیدیوں کو مشتعل کرتے ہوئے خود جیل حکام نے ہی پیٹا ۔ تاہم اس بات کی توثیق نہیں ہوپائی ہے ۔ اس توثیق سے قبل ہی جیل حکام نے فوری اپنا موقف ظاہر کرتے ہوئے پولیس میں شکایت درج کروائی ۔ جیل میں زیر دریافت اور بالخصوص پولیٹکل پرریزنرس ( سیاسی قیدیوں ) کے ساتھ غیر انسانی اور غیر دستوری طرز عمل کے الزامات جیل حکام پر پائے جاتے ہیں اور جیل حکام متعصبانہ رویہ کے الزامات سے بھی محفوظ نہیں ہیں ۔ اب ان مشتبہ زیر دریافت قیدیوں کی سلامتی پر ان کے رشتہ داروں نے سوال اٹھایا ہے اور خوف کا اظہار کیا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT