چھتیس گڑھ میں دو انکاونٹرس۔ 9 نکسلائیٹس اور دو سکیوریٹی اہلکار ہلاک

تلنگانہ کی سرحد پر واقع سکما ضلع میں تلاشی مہم کے دوران فائرنگ کا تبادلہ ۔ ہتھیار اور دھماکو مادے بھی ضبط

رائے پور 26 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) چھتیس گڑھ کے سکما ضلع میں آج پیش آئے دو انکاونٹرس میں 9 نکسلائیٹس اور دو پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے ۔ پولیس کے ایک سینئر عہدیدار نے یہ بات بتائی ۔ ڈائرکٹر جنرل پولیس ( انسداد نکسلائیٹس آپریشنس ) ڈی ایم اوستھی نے بتایا کہ یہ انکاونٹرس کستارام اور چنتاگوفا میں ہوئے جو دونوں ہی سکما ضلع میں واقع ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ انسداد ماویسٹ کارروائیوں کے دوران یہ انکاونٹرس ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اسپیشل ٹاسک فورس ‘ ضلع ریزرو گارڈ اور سی آر پی ایف کی ایلیٹ کوبرا فورس کے کئی دستے اور تلنگانہ پولیس نے مل کر اتوار کی رات دیر گئے سے سکلیر ‘ ٹونڈا مارکا اور سیلاٹونگ گاووں میں مہم شروع کی تھی ۔ جنوبی سکما کو نکسلائیٹس کی ملٹری بٹالین نمبر 1 کا گڑھ سمجھا جاتا ہے اور یہ علاقہ چھتیس گڑھ کے سکما اور بیجا پور اضلاع کے علاوہ تلنگانہ کے کتہ گوڑم ضلع کے سرحدی علاقہ میں واقع ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب ایک پٹرولنگ ٹیم نے جنگلات کے کچھ علاقہ کو پیر کی صبح تلاشی کیلئے گھیرے میں لے لیا تو نکسلائیٹس کی جانب سے فائرنگ کی گئی جس کے بعد انکاونٹر شروع ہوگیا ۔ انہوں نے بتایا کہ اس انکاونٹر میں آٹھ نکسلائیٹس اور ضلع ریزرو گارڈ ( ڈی آر جی ) کے دو اہلکار ہلاک ہوگئے ۔ ان کی ڈی راما اور ماڈوی جوگا کی حیثیت سے شناخت ہوئی ہے ۔ یہاں سے نعشوں کو نکالنے کیلئے ائرفورس کا ہیلی کاپٹر روانہ کیا گیا تھا ۔ ڈی جی نے دو مہلوک نکسلائیٹس کی ٹاٹی بھیما اور ایک خاتون رکن پی راجے کی حیثیت سے شناخت کی ہے جو ممنوعہ تنظیم کے ڈویژنل کمیٹی ارکان تھے اور ان کے سروں پر آٹھ لاکھ روپئے کا انعام تھا ۔ انہوں نے کہا کہ گراونڈ رپورٹ اور وہاں خون کے دھبوں سے پتہ چلتا ہے کہ فائرنگ کے تبادلے میں کئی اور تخریب کار یا تو ہلاک ہوگئے ہیں یا زخمی ہوئے ہیں لیکن دوسرے نکسلائیٹس انہیں جنگل میں کھینچ لیجانے میں کامیاب ہوگئے ۔ ایک اور کارروائی میں کوبرا فورس کے اہلکاروں نے چنتا گوفا علاقہ میں ایک اور نکسلائیٹ کو گولی مار کر ہلاک کردیا ۔ مسٹر اوستھی نے بتایا کہ آج پیش آئے دو انکاونٹرس میں پولیس کو بھاری مقدار میں ہتھیار اور گولہ بارود بھی دستیاب ہوا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ان میں سیلف لوڈنگ رائفل ‘ بور رائفل وغیرہ بھی شامل ہیں ۔ مسٹر اوستھی نے بتایا کہ دونوںانکاونٹرس کی مزید تفصیلات کا ہنوز انتظار ہے ۔

TOPPOPULARRECENT