Thursday , August 16 2018
Home / Top Stories / چھتیس گڑھ میں نکسلائیٹ حملہ ، 9 سی آر پی ایف جوان ہلاک

چھتیس گڑھ میں نکسلائیٹ حملہ ، 9 سی آر پی ایف جوان ہلاک

دھماکے کی شدت سے بکتر بند گاڑی ہوا میں اُڑ گئی ، نعشیں میدان پر بکھر گئیں

رائے پور؍ نئی دہلی۔ 13 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) چھتیس گڑھ کے ضلع سکما میں 50 کیلومیٹر سے زائد انتہائی عصری بارودی مواد کے دھماکہ میں سی آر پی ایف کی ایک بارودی سرنگ دھماکوں سے محفوظ رہنے والی گاڑیوں کو اڑا دیا جس کے نتیجہ میں اس (سی آر پی ایف) کے 9 اہلکار ہلاک اور دیگر کئی زخمی ہوگئے۔ اس ضلع میں گزشتہ سال بھی ماؤ نواز انتہا پسندوں کے ایک ایسے ہی دھماکے میں زائد از ایک درجن سی آر پی ایف جوان ہلاک ہوگئے تھے۔ عہدیداروں نے کہا ہے کہ یہ واقعہ دوپہر 12:30 بجے ایک زیرتعمیر کرسٹارام پالوڈی سڑک پر پیش آیا جب مرکزی ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف ) کی 212 ویں بٹالین کے سپاہی مہم پر باہر نکلے ہوئے تھے۔ عہدیداروں نے کہا کہ سی آر پی ایف کی یہ خصوصی بکتر بند گاڑی دھماکہ کی شدت کے سبب 10 فٹ اوپر تک ہوا میں اُڑ گئی۔ اس کے ٹکڑے سارے علاقہ میں بکھر گئے۔ تمام اہلکار اس دھماکہ کی شدت کے سبب فوت ہوگئے۔ دھماکے کے بعد اس میں سوار کئی افراد گاڑی کے باہر ہوگئے اور ہوا میں اُڑنے لگے تھے۔ اس علاقہ میں 8 بجے صبح نکسلائیٹس دیکھے گئے تھے جنہیں کوبرا ٹیموں نے موثر کارروائی کے ذریعہ واپس بھگا دیا تھا لیکن انہوں نے دوپہر 12 بجے وہاں پہنچ کر دھماکہ کیا۔ پولیس ذرائع کے مطابق سکماضلع ہیڈکوارٹر سے تقریبا 60کلومیٹر دور دوپہر کو نکسلیوں نے اس واقعہ کو انجام دیا ۔اس واقعہ کے بعد دونوں طرف سے فائرنگ بھی ہوئی ۔بعد میں نکسلی گھنے جنگل میں بھاگ گئے ۔زخمیوں کو کرسٹارام میں ابتدائی علاج کے بعد ہیلی کاپٹر سے رائے پور بھیجا گیا ہے ۔نکسلی شہید جوانوں کے ہتھیاربھی لے گئے ۔ذرائع کے مطابق کرسٹارام تھانہ سے سی آرپی ایف کی 212ویں بٹالین کے جوان اینٹی لینڈمائن وھیکل میں سوارہوکر سڑک کی تعمیر میں مصروف مزدوروں کی سکیورٹی کے لئے پالودی گاؤں کی طرف جارہے تھے ۔جنگل میں گھات لگاکر بیٹھے نکسلیوں نے گاڑی کونشانہ بناکر بارودی سرنگ کا دھماکہ کردیا۔دھماکہ اتنا طاقت ورتھا کہ گاڑی کے پرخچے اڑگئے اور اس میں سوار 8جوان موقع پر ہی شہید ہوگئے ۔ایک دیگر کی علاج کے دوران موت ہوگئی ۔دودیگر جوانوں کا علاج جاری ہے ۔دھماکہ کے بعد نکسلیوں نے فائرنگ شروع کردی ۔جواب میں موقع پر موجود دیگر جوانوں نے بھی مورچہ سنبھالا ۔کچھ دیر تک چلے تصادم کے بعد نکسلی بھاگ گئے ۔دریں اثنا جائے وقوع پر مزید کمک بھیجی گئی ہے ۔بسترکے انسپکٹر جنرل آف پولیس ویویکا نند سنہا نے کہا کہ زخمی جوانوں کے بہترعلاج پر توجہ دی جارہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT