Thursday , September 20 2018
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر آندھراپردیش چندرا بابو پر عوام کو دھوکہ دینے کا الزام

چیف منسٹر آندھراپردیش چندرا بابو پر عوام کو دھوکہ دینے کا الزام

سابق صدر پردیش کانگریس کمیٹی بوتسہ ستیہ نارائنا کا بیان

سابق صدر پردیش کانگریس کمیٹی بوتسہ ستیہ نارائنا کا بیان
حیدرآباد ۔ 16 اگست (سیاست نیوز) سابق صدر پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر بوتسہ ستیہ نارائنا نے چیف منسٹر آندھراپردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو پر عوام کو دھوکہ دینے اور گمراہ کرنے کا الزام عائد کیا۔ انہوں نے کہا کہ چندرا بابو نائیڈو نے 10 سال تک اپوزیشن میں رہنے کے بعد ڈوبتی ہوئی تلگودیشم پارٹی کو کنارے تک پہنچانے کیلئے جھوٹے وعدے کئے جن پر عوام نے بھروسہ کیا اور اقتدار ان کے حوالے کیا لیکن چندرا بابو نائیڈو ان وعدوں کو عملی جامہ پہنانے کے موقف میں نہیں ہے۔ انہیں علم تھا ریاست کی تقسیم کے بعد آندھراپردیش مالی بحران کا شکار ہوجائے گا باوجود اس کے انہوں نے صرف اور صرف اقتدار کی لالچ میں عوام سے ایسے وعدے کئے جس پرعمل آوری ممکن نہیں تھی۔ اقتدار حاصل کرنے کے ڈھائی ماہ بعد چندرا بابو نائیڈو نے جن 5 وعدوں کے فائلوں پر پہلی دستخط کی تھی، اس پر آج تک عمل آوری کا آغاز بھی نہیں ہوا ہے۔ کسان اور خواتین قرض معافی کا بڑی بے چینی سے انتظار کررہے ہیں۔ ریزرو بینک آف انڈیا قرض معافی کو منظوری دینے کیلئے تیار نہیں ہے باوجود اس کے حکومت قرض معاف کرنے کے معاملے میں کسانوں اور خواتین کو گمراہ کررہی ہے۔ پہلے مکمل قرض کا وعدہ کیا گیا پھر اس کو دیڑھ لاکھ تک محدود کردیا گیا۔ ابھی تک قرض معاف نہیں کئے گئے اور نہ ہی کسانوں کو نئے قرضہ جات جاری کئے گئے جس سے کسانوں اور خواتین میں تشویش کی لہر پائی جاتی ہے۔ ہر گھر ایک ملازمت دینے کا وعدہ کیا گیا جبکہ سرکاری خزانہ موجودہ ایمپلائز کے تنخواہیں ادا کرنے کے موقف میں نہیں ہے۔ بیروزگار نوجوانوں کو ملازمتیں حاصل ہونے تک ماہانہ بیروزگاری کا بھتہ دینے کا وعدہ کیا گیا اس پر کوئی عمل آوری نہیں ہوئی ہے۔ 10 سال تک حیدرآباد آندھراپردیش کیلئے عارضی دارالحکومت ہے۔ باوجود اس کے وجئے واڑہ کو عارضی ہیڈکوارٹر بنانے کی تجویز پیش کرتے ہوئے فنڈز کا بیجا استعمال کرنے اور اپنے حامیوں کو فائدہ پہنچانے کی کوشش کی جارہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT