Saturday , November 18 2017
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر تلنگانہ اپنے حلقہ اسمبلی سے دوبارہ کامیاب نہیں ہونگے

چیف منسٹر تلنگانہ اپنے حلقہ اسمبلی سے دوبارہ کامیاب نہیں ہونگے

سیاسی وفاداریوں کی تبدیلی ، دوبارہ انتخابات پر زور: کومٹ ریڈی وینکٹ ریڈی
حیدرآباد ۔ 14 ۔ اکٹوبر : ( سیاست نیوز ) : کانگریس کے رکن اسمبلی مسٹر کومٹ ریڈی وینکٹ ریڈی نے کہا کہ چیف منسٹر کے سی آر نے اپنے اسمبلی حلقہ گجویل سے دوبارہ کامیاب نہیں ہوں گے ۔ اگر چیف منسٹر کو اپنے سروے پر بھروسہ ہے تو وہ ضلع نلگنڈہ سے سیاسی وفاداریاں تبدیل کرنے والے ارکان کے حلقوں میں ضمنی انتخابات کا انعقاد کرائے ۔ اگر ٹی آر ایس کامیاب ہوتی ہے وہ 2019 کے عام انتخابات میں حصہ نہیں لیں گے ۔ آج یہاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے مسٹر کومٹ ریڈی وینکٹ ریڈی نے کہا کہ چیف منسٹر کی جانب سے کرایا گیا سروے بوگس ہے ۔ ریاست کے عوام مختلف مسائل سے دوچار ہیں ۔ سماج کا کوئی بھی طبقہ حکومت کی کارکردگی سے مطمئن نہیں ہے ۔ کسانوں کے قرضہ جات سے متعلق تیسری قسط کا نصف حصہ ادا نہ کرنے کی وجہ سے بنکس کسانوں کو قرض دینے سے انکار کررہے ہیں ۔ طلبہ کی فی ری ایمبرسمنٹ اور آروگیہ شری کے بقایہ جات جاری نہیں کیے گئے جس سے کامیابی حاصل کرنے کے باوجود کالج انتظامیہ طلبہ کو سرٹیفیکٹس جاری کرنے سے انکار کررہے ہیں اور خانگی و کارپوریٹ ہاسپٹلس آروگیہ شری کے تحت غریب عوام کا علاج کرنے سے انکار کررہے ہیں ۔ علحدہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے بعد ایک لاکھ سرکاری ملازمتیں فراہم کرنے ڈبل بیڈروم فلیٹس فراہم کرنے میں حکومت پوری طرح ناکام ہوگئی ۔ وعدے کے مطابق مسلمانوں اور قبائلی طبقات کو 12 فیصد تحفظات اور دلت طبقات کو 3 ایکڑ اراضی جیسے اہم وعدوں کو پورا نہیں کیا گیا ۔ خشک سالی اور بارش سے فصلیں تباہ ہوئی ہیں ۔ چیف منسٹر اور کسی بھی وزراء نے متاثرہ کسانوں سے ملاقات نہیں کی ۔ ٹی آر ایس کس بنیاد پر عوام سے ووٹ طلب کرے گی اور عوام ٹی آر ایس کو ووٹ کیوں دیں ۔ چیف منسٹر بوگس سروے پر بھروسہ کرتے ہوئے خواب غفلت میں ہے ۔ اگر عام انتخابات ہوتے ہیں تو چیف منسٹر اپنے حلقہ اسمبلی گجویل سے بھی جیت نہیں پائیں گے ۔ اضلاع کی تنظیم جدید کرتے ہوئے اس کی تعداد 31 بنادیں یا 131بنادیں اس سے کوئی فرق پڑنے والا نہیں ہے ۔ کیوں کہ ریاست میں ٹی آر ایس حکومت کی الٹی گنتی کا آغاز ہوگیا ہے ۔ عوام حکومت کی کارکردگی سے مایوس ہیں ۔ کومٹ ریڈی وینکٹ ریڈی نے کہا کہ ضلع نلگنڈہ سے جن قائدین نے ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کی ہے ۔ ان کے حلقوں میں دوبارہ انتخابات کروائیں اگر ٹی آر ایس کامیاب ہوتی ہے تو وہ 2019 کے عام انتخابات میں حصہ بھی نہیں لیں گے ۔۔

TOPPOPULARRECENT