Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر پر اپوزیشن کا صفایا کرنے کا الزام

چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر پر اپوزیشن کا صفایا کرنے کا الزام

حیدرآباد ۔12 اگست (سیاست نیوز) قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل محمد علی شبیر نے اپوزیشن کا صفایا کرنے کیلئے انتقامی کارروائی کرنے کا چیف منسٹر کے سی آر پر الزام عائد کیا۔ پولیس پر ٹی آر ایس کارکنوں کی طرح کام کرتے ہوئے کاماریڈی اور نظام آباد میں کانگریس کارکنوں اور طلبہ پر بے رحمانہ مارپیٹ کرنے کی تنقید کی۔ تلنگانہ تحریک میں ٹی آر ایس کیلئے ہیرو کہلانے والے پروفیسر کودنڈارام کو ویلن تصور کرنے کی مذمت کی۔ آج گاندھی بھون میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے محمد علی شبیر نے کہا کہ عوامی اعتماد سے محروم ہوجانے والے کے سی آر اپنے اقتدارکو بچانے اور دوبارہ اقتدار حاصل کرنے کیلئے اپوزیشن کے خلاف ظالمانہ رویہ اپناتے ہوئے نہ صرف ان کے خلاف سیاسی انتقام لے رہے ہیں بلکہ ریاست کے عوام میں ڈر و خوف پیدا کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ کانگریس پارٹی نے کئی عروج و زوال کو دیکھا ہے۔ پہاڑ جیسے کانگریس کے سامنے ٹی آر ایس اور کے سی آر ذرہ برابر نہیں ہے۔ کانگریس پارٹی جمہوری اقدار اور اصولوں کا احترام کرتے ہوئے پرامن طریقے سے اپوزیشن کا تعمیری رول ادا کررہی ہے۔ عوامی مسائل پر جمہوری انداز میں احتجاج کررہی ہے جس کو چیف منسٹر کے سی آر کمزوری سمجھنے کی کوشش کرہے ہیں۔ اپنی حکومت کو بچانے کیلئے اپوزیشن کے خلاف پولیس کی طاقت کا استعمال کررہے ہیں۔ تلنگانہ کی تحریک کو کامیاب بنانے میں اہم رول ادا کرنے والے تلنگانہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے صدورنشین پروفیسر کودنڈارام کو دشمن کی نظر سے دیکھا جارہا ہے جبکہ تحریک کے دوران ان کی خدمات سے استفادہ کرتے ہوئے کانگریس اور دوسری اپوزیشن جماعتوں کو تنقید کا نشانہ بنانے والے چیف منسٹر اور ٹی آر ایس کے قائدین اقتدار حاصل ہونے کے بعد عوامی مسائل پر یاترا کرنے والے پروفیسر کودنڈارام کو کانگریس اور تلگودیشم کا ایجنٹ قرار دیتے ہوئے انہیں اضلاع کا دورہ کرنے سے روک رہے ہیں۔ پروفیسر کودنڈارام کی تائید کرنے والے کانگریس کے کارکنوں طلبہ و نوجوانوں پر پولیس نے کاماریڈی اور نظام آباد میں بیدردی سے لاٹھی چارج کرتے ہوئے نہ صرف انہیں گرفتار کیا ہے بلکہ ان کے خلاف جھوٹے مقدمات بھی درج کئے ہیں جس کی وہ سخت مذمت کرتے ہیں۔ اقتدار حاصل کرنے کے بعد تلنگانہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے نام و نشان کوختم کرنے کیلئے حکومت کی جانب سے سرکاری طور پر ہر ممکن کوشش کی جارہی ہے۔ تلنگانہ کے عوام ٹی آر ایس حکومت کی کارکردگی سے بدظن ہوگئے ہیں اور اس کو سبق سکھانے کیلئے 2019ء کے عام انتخابات کا بڑی بے چینی سے انتظار کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT