Saturday , April 21 2018
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر حج ہاوز سے متصل عمارت کو لیز پر دینے کے شدید مخالف

چیف منسٹر حج ہاوز سے متصل عمارت کو لیز پر دینے کے شدید مخالف

عمارت میں اقلیتی بہبود کے تمام دفاتر منتقل کرنے کی ہدایت، وقف بورڈ کی صورتحال افسوسناک

٭ اقلیتی فینانس کارپوریشن کی کارکردگی پراظہار عدم اطمینان
٭ شادی مبارک اسکیم کو سہل بنانے کی ہدایت، آج اسمبلی میں اہم اعلانات
٭ جامعہ نظامیہ کی ڈگری کو عثمانیہ یونیورسٹی کی ڈگری کے مماثل قرار دینے احکامات
٭ عہدیدار جائیدادیں اور اراضیات کی تفصیلات بتانے سے قاصر
٭ وقف اسکام میں ملوث ہونے کا شبہ، سی بی سی آئی ڈی تحقیقات کا امکان
٭ چیف منسٹر اور وزراء کے علاوہ تمام سرکاری دفاتر میں اردو مترجمین کے تقررات

حیدرآباد۔ 8 نومبر (سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے حج ہاؤز سے متصل سات منزلہ کامپلیکس میں اقلیتی بہبود کے تمام دفاتر منتقل کرنے کی ہدایت دی۔ اس کے علاوہ وقف بورڈ کی جانب سے کامپلیکس کو لیز پر دیئے جانے سے متعلق اعلامیہ سے دستبرداری اختیار کرنے وقف بورڈ حکام کو پابند کیا گیا۔ چیف منسٹر نے آج عہدیداروں اور عوامی نمائندوں کے ساتھ 4 گھنٹوں سے زائد وقت تک اقلیتی اُمور کا جائزہ لیا اور اہم فیصلے کئے گئے۔ چیف منسٹر نے تمام سرکاری دفاتر بشمول چیف منسٹر اور وزراء کے دفاتر میں اُردو مترجمین کے تقرر پر فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے وقف بورڈ کی موجودہ صورتِ حال پر افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ عہدیدار، جائیدادوں اور اراضیات سے متعلق تفصیلات بتانے سے قاصر ہیں۔ چیف منسٹر نے ریمارک کیا کہ وقف بورڈ کے جو ملازمین کل ان کے اجلاس میں شریک تھے، انہیں دیکھتے ہی ایسا محسوس ہورہا تھا جیسے یہ لوگ وقف اسکام میں ملوث ہیں اور وہ اس معاملے کو سی بی سی آئی ڈی کے حوالے کرنا چاہتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ وقف بورڈ میں تمام ریکارڈ محفوظ کردیا گیا ہے اور بہت جلد حکومت فیصلہ کرے گی کہ عہدیداروں کی ٹیم یا اسمبلی کی کمیٹی کے ذریعہ جانچ کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ آئی اے ایس اور آئی پی ایس عہدیداروں کو اس کام میں شامل کیا جائے گا۔ جائزہ اجلاس میں ڈپٹی چیف منسٹرس محمد محمود علی، کڈیم سری ہری، چیف سیکریٹری ایس پی سنگھ، حکومت کے خصوصی مشیر راجیو شرما، سیکریٹری فینانس رام کرشنا، ارکان مقننہ عامر شکیل، محمد سلیم، فاروق حسین، فریدالدین، حکومت کے مشیر برائے اقلیتی بہبود اے کے خاں، سیکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل، سیکریٹری ڈائریکٹر اُردو اکیڈیمی پروفیسر ایس اے شکور، مینیجنگ ڈائریکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن بی شفیع اللہ، چیف ایگزیکٹیو آفیسر وقف بورڈ منان فاروقی اور دوسرے شریک تھے۔

چیف منسٹر نے کہا کہ تمام اسکیمات میں ایس سی، ایس ٹیز طبقات کی طرح اقلیتوں کو بھی مراعات دی جائیں گی۔ چیف منسٹر نے اوورسیز اسکالرشپ اسکیم کی تمام درخواستوں کی عاجلانہ یکسوئی اور اسے گرین چیانل میں شامل کرنے کی ہدایت دی تاکہ طلبہ کو بیرون ملک تعلیم میں دشواری نہ ہو۔ چیف منسٹر نے کہا کہ ریاست کے یونٹ تصور کرتے ہوئے اُردو کو دوسری سرکاری زبان کا درجہ دیا جائے گا۔ اس سلسلے میں کل اسمبلی میں اعلان کیا جاسکتا ہے۔ سابقہ اضلاع میں ضلع کھمم میں اُردو کو دوسری سرکاری زبان کا درجہ حاصل نہیں تھا۔ چیف منسٹر نے ضلع کلکٹر رنگاریڈی کو ہدایت دی کہ اسلامک کلچرل سنٹر کی تعمیر کیلئے کوکا پیٹ میں 10 ایکر اراضی الاٹ کی جائے۔

انہوں نے اقلیتی فینانس کارپوریشن کی کارکردگی پر عدم اطمینان کا اظہار کیا اور عہدیداروں سے کہا کہ وہ اس بات کا جائزہ لیں کہ آیا کارپوریشن کی اسکیمات کو ضلع کلکٹرس کے تحت کرتے ہوئے اس ادارہ کو برخاست کردیا جائے۔ چیف منسٹر نے کہا کہ اس ادارہ کے ذریعہ کوئی کام نہیں ہورہا ہے۔ سیکریٹری اقلیتی بہبود نے کارپوریشن کو موصولہ درخواستوں کو ختم کرنے کے بجائے ان کی یکسوئی کے سلسلے میں لائحہ عمل تیار کرنے کی تجویز پیش کی۔ چیف منسٹر نے اُردو اکیڈیمی کو مستحکم کرنے کا اعلان کیا اور عہدیداروں سے کہا کہ وہ نئی اسکیمات تیار کریں۔ حکومت درکار بجٹ جاری کرنے کیلئے تیار ہے۔ ہر محکمہ میں کم از کم ایک اردو مترجم کا جلد تقرر کیا جائے گا۔ چیف منسٹر، وزراء، ضلع کلکٹرس اور محکمہ جات کے ہیڈ آف دی ڈپارٹمنٹس کے دفاتر میں اردو مترجمین دستیاب رہیں گے۔ انہوں نے شادی مبارک اسکیم میں بعض دشواریوں کی شکایت پر تیقن دیا کہ اگر لڑکی کی عمر 18 سال ہے اور برتھ سرٹیفکیٹ موجود نہیں تو تعلیمی سرٹیفکیٹ ، ووٹر آئی ڈی کارڈ، آدھار کارڈ یا ڈرائیونگ لائسنس بھی قابل قبول ہوگا۔ اس سلسلے میں چیف منسٹر کل اسمبلی میں اعلان کریں گے۔ انہوں نے جامعہ نظامیہ کی ڈگری کو عثمانیہ یونیورسٹی کی ڈگری کے مماثل قرار دینے سے متعلق احکامات جی اے ڈی سے جاری کرنے کی ہدایت دی۔ انہوں نے حج ہاؤز سے متصل زیرتعمیر کامپلیکس کو خانگی اداروں کو لیز پر دینے کی مخالفت کی۔ چیف منسٹر نے کہا کہ اقلیتی بہبود کے تمام دفاتر اس عمارت میں منتقل کئے جائیں تاکہ اقلیتوں کو سہولت ہو۔ اسمبلی اجلاس کے بعد ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی، مسلم ارکان اسمبلی کے ساتھ اس سلسلے میں حکمت عملی تیار کریں گے۔اس عمارت میں اقلیتی بہبود ڈائریکٹوریٹ، مائناریٹی اسٹڈی سرکل ، سی ای ڈی ایم اور دیگر دفاتر منتقل کئے جائیں گے اور حج ہاؤز کی عمارت خالص حج کیمپ کیلئے استعمال کی جائے۔ گی۔ چیف منسٹر نے اقلیتی اقامتی اسکول سوسائٹی کے دفتر کیلئے حیدرآباد میں موزوں مقام پر اراضی الاٹ کرنے کا تیقن دیا۔ چیف منسٹر وقف بورڈ کے اراکین کے ساتھ جمعہ کو اجلاس منعقد کرنے کا تیقن دیا تاکہ بورڈ کی کارکردگی بہتر بنائی جاسکے۔ اجلاس کے دوران چیف منسٹر نے صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم کو تیقن دیا کہ حکومت ، وقف جائیدادوں کی ترقی کیلئے ہر ممکن مدد کرے گی۔ بورڈ کی کارکردگی میں سدھار کیلئے قابل اسٹاف فراہم کیا جائے گا۔ محمد سلیم نے شکایت کی کہ صدرنشین کی ذمہ داری سنبھالنے کے بعد سے وہ خود بھی نااہل اسٹاف کے سبب پریشان ہیں۔

 

TOPPOPULARRECENT