Friday , November 17 2017
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر نے شہیدان تلنگانہ کے خاندانوں کو فراموش کردیا

چیف منسٹر نے شہیدان تلنگانہ کے خاندانوں کو فراموش کردیا

کے سی آر فیملی کے تمام افراد کو اعلی عہدے ۔ حکومت پر تنقید ۔ ریونت ریڈی کا کھلا مکتوب
حیدرآباد 4 جون ( آئی این این ) تلنگانہ تلگودیشم کے ورکنگ صدر اے ریونت ریڈی نے الزام عائد کیا کہ ٹی آر ایس حکومت کی جانب سے ان شہیدوں کے افراد خاندان کی فلاح و بہبود کو نظر انداز کیا جا رہا ہے جنہوں نے تلنگانہ ریاست کے کاز کیلئے اپنی جانیں قربان کردیں تھیں۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کے نام ایک کھلا مکتوب روانہ کرتے ہوئے ریونت ریڈی نے کہا کہ ریاستی حکومت شہیدوں کے افراد خاندان کو وعدہ کے مطابق روزگار اور معاشی امداد فراہم کرنے میں ناکام رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کے چندر شیکھر راؤ نے اپنے سارے خاندان کو اعلی عہدے فراہم کردئے ہیں اور انہوں نے شہیدوں کے خاندانوں کو یکسر فراموش کردیا ہے ۔ ریونت ریڈی نے الزام عائد کیا کہ شہیدوں کے افراد خاندان کو 2 جون کو تلنگانہ کے دوسرے یوم تاسیس کے موقع پر جو مکتوبات تقرر حوالے کئے گئے تھے وہ کارکرد نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عادل آباد میں 27 افراد کو مکتوبات تقرر حوالے کئے گئے تھے لیکن ضلع انتظامیہ انہیں ملازمت فراہم کرنے میں ناکام رہا ہے جو شہیدوں کی ہتک اور توہین ہے ۔ ریونت ریڈی نے چیف منسٹر پر اس لئے بھی تنقید کی کہ انہوں نے تلنگانہ احتجاج سے متعلق مقدمات سے دستبرداری اختیار نہیں کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سارے تلنگانہ میں علیحدہ ریاست کیلئے احتجاج کے دوران جملہ 3,152 مقدمات درج کئے گئے تھے ۔ اس کے علاوہ ریلوے پولیس کی جانب سے علیحدہ مقدمات درج کئے گئے تھے ۔ انہوںن ے کہا کہ ریاستی حکومت نے ابھی تک ان مقدمات سے دستبرداری اختیار نہیں کی ہے ۔ علاوہ ازیں ریلوے کی جانب سے درج مقدمات سے دستبرداری کیلئے بھی مرکز سے کوئی موثر نمائندگی نہیں کی گئی ہے ۔ تلگودیشم لیڈر نے مطالبہ کیا کہ ریاستی حکومت تلنگانہ احتجاج کے شہیدوں کے افراد خاندان کو فراہم کردہ مدد پر ایک وائیٹ پیپر جاری کرے ۔ انہوں نے خبردار کیا کہ اگر ایسا نہیں کیا جاتا ہے تو تلگودیشم کی جانب سے ٹی آر ایس حکومت کے خلاف بڑے پیمانے پر احتجاج شروع کیا جائیگا ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT