Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر نے صرف 14 ماہ میں ریاست کو دیوالیہ سے دوچار کردیا

چیف منسٹر نے صرف 14 ماہ میں ریاست کو دیوالیہ سے دوچار کردیا

فون ٹیپنگ واقعہ میں تین آئی پی ایس و دو آئی اے ایس عہدیدار ملوث : تلگودیشم پارٹی کا ادعا
حیدرآباد ۔ 25 ۔ جولائی : ( سیاست نیوز) : چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی زیر قیادت ٹی آر ایس حکومت نے ریاست تلنگانہ کو دیوالیہ سے دوچار کر رکھدینے کا تلنگانہ تلگو دیشم پارٹی نے الزام عائد کیا اور کہا کہ متحدہ ریاست آندھرا پردیش کی تقسیم کے بعد فاضل آمدنی والی ریاست تلنگانہ کو صرف 14 ماہ میں خسارہ والی ریاست میں تبدیل کردیا ۔ آج یہاں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے مسٹر وی پرتاپ ریڈی سینئیر قائد تلگو دیشم پارٹی نے یہ بات کہی اور بتایا کہ گذشتہ چند دنوں قبل کونسل انتخابات کے موقعہ پر نوٹ کے عوض ووٹ معاملہ میں کی گئی فون ٹیاپنگ واقعہ میں تین آئی پی ایس عہدیداروں اور دو آئی اے ایس عہدیداروں کے ملوث پائے جانے کا پتہ چلا ہے ۔ مسٹر پرتاپ ریڈی نے چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی زیر قیادت تلنگانہ حکومت کو اپنی سخت تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ
فون ٹیاپنگ واقعہ کے باعث اور اس واقعہ کی بڑے پیمانے پر کی گئی تشہیر کے نتیجہ میں آج ریاست تلنگانہ میں صنعتوں وغیرہ کے قیام میں سرمایہ کاری کے لیے حیدرآباد کا رخ کرنے سے عملاً احتراز کررہے ہیں ۔ انہوں نے چیف منسٹر کے حیدرآباد اور اس کے مضافاتی علاقوں کے دورہ کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ محض آئندہ دنوں میں گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن انتخابات کے پیش نظر سیاسی مفادات کے حصول کے لیے ہی مسٹر چندر شیکھر راؤ دورے کررہے ہیں ۔ مسٹر پرتاپ ریڈی نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت کے دن قریب آچکے ہیں اور کبھی بھی حکومت کو دھکہ پہونچ سکتا ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT