Friday , December 15 2017
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر کے خلاف جگاریڈی کے بیان بازی کی مذمت

چیف منسٹر کے خلاف جگاریڈی کے بیان بازی کی مذمت

ٹی آر ایس کے باعث ہی وہ رکن اسمبلی منتخب ہوئے
حیدرآباد ۔ 6۔ جون (سیاست نیوز)  ٹی آر ایس ارکان مقننہ جی مہی پال ریڈی اور بھوپال ریڈی نے کانگریس کے قائد جگا ریڈی کی جانب سے چیف منسٹر کے خلاف بیان بازی کی سخت مذمت کی۔ ارکان مقننہ نے کہا کہ جگا ریڈی آج بڑی باتیں کررہے ہیں لیکن ٹی آر ایس کے باعث ہی وہ رکن اسمبلی منتخب ہوئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ جگا ریڈی کو کے سی آر اور ہریش راؤ نے سیاسی بھیک دی تھی جس کے نتیجہ میں وہ رکن اسمبلی منتخب ہوئے تھے ورنہ ان کا سیاسی مستقبل تاریک رہتا۔ ارکان مقننہ نے متنبہ کیا کہ اگر چیف منسٹر کے سی آر اور ریاستی وزیر ہریش راؤ کے خلاف بے بنیاد الزامات کا سلسلہ جاری رہا تو وہ خاموش نہیں رہیں گے ۔ جگا ریڈی صرف اپنی شہرت کیلئے اس طرح کے بیانات دے رہے ہیں جبکہ عوام میں ان کا کوئی مقام نہیں ہے ۔ سنگا ریڈی کے عوام نے جگا ریڈی کو مسترد کردیا ہے اور وہ ان کے الزامات پر کوئی توجہ نہیں دیںگے۔ ارکان مقننہ نے جگا ریڈی کو چیلنج کیا کہ اگر ان میں ہمت ہو تو وہ پٹن چیرو اسمبلی حلقہ سے مقابلہ کر کے دکھائیں ۔ انہوں نے کہا کہ اگر چیف منسٹر کے خلاف بیان بازی کا سلسلہ جاری رہا تو عوام جگا ریڈی کو مناسب سبق سکھائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ راہول گاندھی کے دورہ سنگا ریڈی کے بعد کانگریس پارٹی تلنگانہ میں اقتدار کا خواب دیکھ رہی ہے۔ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے بعد عوام نے کے سی آر کی قیادت پر اعتماد کرتے ہوئے ٹی آر ایس کو اقتدار عطا کیا ۔ گزشتہ تین برسوں میں کے سی آر نے ریاست کو ترقی کی راہ پر گامزن کردیا اور ملک میں تلنگانہ سرفہرست آچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ فلاحی اسکیمات کے آغاز میں تلنگانہ دیگر ریاستوں سے آگے ہے اور مختلف ریاستوں کی جانب سے تلنگانہ کی اسکیمات کی تفصیلات حاصل کی جارہی ہیں۔ ارکان مقننہ نے کہا کہ کانگریس پارٹی عوامی تائید سے محروم ہوچکی ہیں اور اس کا تلنگانہ میں برسر اقتدار آنے کا خواب کبھی پورا نہیں ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT