Tuesday , August 21 2018
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر کے سی آر کی قیادت میں سنہرے تلنگانہ کا خواب شرمندہ تعبیر

چیف منسٹر کے سی آر کی قیادت میں سنہرے تلنگانہ کا خواب شرمندہ تعبیر

کانگریس نے تلنگانہ کو تمام شعبوں میں پسماندہ بنادیا تھا، گورنر کے خطبہ پر اظہارتشکر، کے ایشور کا خطاب

حیدرآباد ۔ 13 مارچ (سیاست نیوز) ٹی آر ایس نے گورنر کے خطبہ کو حکومت کی کارکردگی کا آئینہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ چیف منسٹر کے سی آر کی قیادت میں سنہرے تلنگانہ کا خواب شرمندہ تعبیر ہورہا ہے۔ آج اسمبلی میں گورنر کے خطبہ اظہارتشکر پر مباحث کا آغاز کرتے ہوئے گورنمنٹ چیف وہپ کے ایشور نے کہا کہ 60 سال تک اقتدار پر رہنے والی کانگریس نے تلنگانہ کو تمام شعبوں میں پسماندہ کرتے ہوئے کنگال بنادیا ہے۔ زرعی شعبہ بحران کا شکار تھا، جس سے کسان خودکشیاں کررہے تھے۔ کالیشورم پراجکٹ کو جنگی خطوط پر مکمل کیا جارہا ہے۔ ایس سی، ایس ٹی، بی سی اور اقلیتی طلبہ کیلئے بڑے پیمانے پر مفت تعلیم و قیام کیلئے اقامتی اسکولس قائم کئے گئے ہیں۔ 40 ہزار کروڑ روپئے کے مصارف سے 35 فلاحی اسکیمات پر عمل کیا جارہا ہے۔ ریاست کی شرح ترقی 8 فیصد تک پہنچ گئی ہے جبکہ قوی شرح ترقی 5 فیصد ہے۔ کسانوں کے 17 ہزار کروڑ روپئے کے قرض معاف کئے گئے۔ زرعی اجناس کی پیداوار میں بتدریج اضافہ ہورہا ہے۔ زرعی شعبہ کو حکومت کی جانب سے 24 گھنٹے مفت برقی سربراہ کی جارہی ہے۔23 چھوٹے اور 13 بڑے آبپاشی پراجکٹس تعمیر کئے جارہے ہیں۔ 4 سال قبل برقی کی طلب 7 ہزار میگاواٹ تھی جو اب بڑھ کر 10 ہزار میگاواٹ تک پہنچ گئی ہے۔ سولار برقی کی پیداوار میں ریاست تلنگانہ سارے ملک میں سرفہرست ہے۔ 6020 کمپنیوں کو منظوری دی گئی ہے جس سے ریاست میں 1.18 لاکھ کروڑ روپئے کی سرمایہ کاری ہورہی ہے۔ آئی ٹی شعبہ میں راست 4 لاکھ اور بلواسطہ 7 لاکھ افراد کو روزگار حاصل ہورہا ہے۔ سرکاری ہاسپٹلس میں ڈیلوریز کا تناسب 33 فیصد سے بڑھ کر 49 فیصد تک پہنچ گیا ہے۔ واٹر گرڈ کا کام 90 فیصد مکمل ہوگیا ہے۔ ٹی آر ایس کے رکن اسمبلی ویویکانند گوڑ نے کہا کہ تلنگانہ تحریک کے بانی کے سی آر ریاست کے چیف منسٹر بنتے ہوئے سنہرے تلنگانہ تحریک کے بانی کے سی آر ریاست کے چیف منسٹر بنتے ہوئے سنہرے تلنگانہ خواب کو شرمندہ تعبیر کرنے اور عوام کی زندگیوں میں خوشحالی لانے کیلئے دن رات محنت کررہے ہیں۔ تلنگانہ کی ترقی اور غریب و پسماندہ طبقات کی ترقی و بہبود کیلئے جو بھی عملی اقدامات کئے جارہے ہیں اس کی ملک بھر میں ستائش کی جارہی ہے۔ زرعی شعبہ میں انقلابی ترقی ہوئی۔ برقی بحران سے تلنگانہ کو نجات مل گئی ہے۔ آئی ٹی ایکسپورٹ میں زبردست اضافہ ہوگیا ہے۔ 500 سے زائد ریسیڈنشیل اسکولس قائم کئے گئے۔ ازاف ڈوینگ بزنس میں تلنگانہ سارے ملک میں سرفہرست ہے۔

TOPPOPULARRECENT