Wednesday , November 14 2018
Home / شہر کی خبریں / چیف منسٹر کے قافلہ میں دو شرابی گھس پڑے

چیف منسٹر کے قافلہ میں دو شرابی گھس پڑے

ناقص سیکوریٹی سے کچھ دیر کیلئے سنسنی ، عہدیداروں کی معطلی کا امکان، دو شرابی گرفتار
حیدرآباد /16 مارچ ( سیاست نیوز ) چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندرا شیکھر راؤ کو آج تلخ تجربہ کا سامنا کرنا پڑا ۔ بتایا جاتا ہے کہ پولیس کی لاپرواہی کے سبب یہ واقعہ پیش آیا جس سے سی ایم قافلہ اور سیکوریٹی اچانک چونگ گئی اور تھوڑی دیر کیلئے سنسنی پیدا ہوگئی ۔ اسمبلی میں اپوزیشن کے حملوں کا کرارا جواب دیکر تھکان سے دور پرسکون ماحول میں وقت گذارنے اور دیگر مصروفیت کیلئے چیف منسٹر تلنگانہ آج رات اپنے فارم ہاوز ایرہ ویل ( گجویل ) کیلئے روانہ ہوئے ۔ چیف منسٹر کا قافلہ پرسکون انداز میں جارہا تھا جیسے ہی سکندرآباد کا علاقہ آیا ۔ اچانک دو شرابی نمودار ہوگئے اور ہنگامہ آرائی کرتے ہوئے چیف منسٹر کے قافلہ کی طرف دوڑ پڑے اس بات سے سخت تشویش کا شکار سی ایم سیکوریٹی اور قافلہ میں سنسنی پیدا ہوگئی ۔ تاہم چند لمحات کے اندر پولیس نے ان شرابیوں کو حراست میں لے لیا اور ان سے پوچھ گچھ جاری ہے ۔ تاہم اس واقع نے جہاں ایک طرف چیف منسٹر کا چین و سکون برباد کردیا ۔ وہیں دوسری طرف سٹی پولیس کی چوکس کی قلعی کھول دی کے کمیونٹی پولیسنگ کے اس دور میں جبکہ پولیس کی کامیابی اور کارکردگی کا سا را درومدار سی سی ٹی وی کیمروں اور جدید آلات و ٹکنالوجی پر منحصر ہے باوجوداس کے چیف منسٹر کا قافلہ بھی محفوظ نہیں ۔ بتایا جاتا ہے کہ اس واقعہ کا سخت نوٹ لیتے ہوئے اس علاقہ میں سیکوریٹی کے ذمہ دار سب انسپکٹر کے خلاف کارروائی کے احکامات پائے جاتے ہیں اور سب انسپکٹر کیشورولو کو معطل کیا جانے کا مکان بھی ہے ۔ واضح رہے کہ حالیہ ماؤسٹوں کے ساتھ انکاونٹر کے واقع کے بعد ریاست میں سخت چوکسی اختیار کی گئی ہے اور چیف منسٹر کی سیکوریٹی میں بھی اضافہ کردیا گیا ہے ۔ اس کے باوجود آج چیف منسٹر موٹروں کے قافلہ میں یہ واقعہ پیش آنا متعلقہ حکام کیلئے تشویش کا باعث ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT