Tuesday , November 21 2017
Home / Top Stories / چینائی میں بچاؤ و راحت کاموں میں تیزی ‘ کئی علاقوں میں بارش جاری فوج نے 5000 افراد کو محفوظ مقامات کو منتقل کیا ۔ وزیر اعظم نریندر مودی کا فضائی سروے ۔ 1000 کروڑ روپئے کی امداد کا اعلان

چینائی میں بچاؤ و راحت کاموں میں تیزی ‘ کئی علاقوں میں بارش جاری فوج نے 5000 افراد کو محفوظ مقامات کو منتقل کیا ۔ وزیر اعظم نریندر مودی کا فضائی سروے ۔ 1000 کروڑ روپئے کی امداد کا اعلان

٭    ہلاکتوں کی تعداد 269 ہوگئی ‘ آج کچھ پروازوں کا امکان
٭    اسکولس ‘ کالجس اور ائرپورٹ 6 ڈسمبر تک بند ۔
چینائی 3 ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) چینائی میں آج بارش دن میں قدرے تھمی رہی جس کے نتیجہ میں راحت و بچاؤ کاموں میں تیزی پیدا ہوئی تھی اور فوج ‘ بحریہ و ائر فورس کی جانب سے بچاؤ کاموں میں تیزی پیدا ہوئی تھی تاہم شام سے دوبارہ بارش شروع ہوگئی جس کا سلسلہ رات دیر گئے تک جاری رہا ۔ آج وزیر اعظم نریندر مودی نے چینائی کا دورہ کیا اور انہوں نے یہاں ہوئے نقصانات کا فضائی سروے بھی کیا ۔ فضائی سروے کے بعد وزیر اعظم نے چینائی کے سیلاب و بارش کے متاثرین کیلئے 1000 کروڑ روپئے کی امداد کا اعلان کیا جبکہ چیف منسٹر ٹاملناڈو جئے للیتا نے مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا جو ابتدائی نقصانات ہوئے ہیں ان کو دیکھتے ہوئے مرکزی حکومت 5000 کروڑ روپئے کی امداد فراہم کرے ۔ ریاستی حکومت نے سیلاب کے بارش اور سیلاب کے نتیجہ میں اموات کی تعداد 269 بتائی ہے ۔ بعض اطلاعات میں مہلوکین کی تعداد 300 سے متجاوز بتائی گئی ہے ۔

فوج کی جانب سے راحت رسانی و بچاؤ کاموں میں تیزی پیدا کرتے ہو ئے تقریبا پانچ ہزار افراد کو محفوظ مقامات کو منتقل کیا گیا ہے ۔ عوام کیلئے بارش تھمنے کے بعد سیلاب کا پانی جمع ہوجانے کے نتیجہ میں مزید مشکلات پیدا ہوگئی ہیں۔ کئی علاقے ہنوز پانی سے گھرے ہوئے ہیں اور عوام کو حمل و نقل میں رکاوٹ برقرار ہے ۔ چینائی ائرپورٹ کو 6 ڈسمبر تک کیلئے بند کردیا گیا ہے اور یہاں رن وے اور پارکنگ بے میں پانی جمع ہے ۔ یہاں کئی طیارے پانی میں گھرے ہوئے ہیں ۔ ائرپورٹ پر ہنوز 100 افراد پھنسے ہوئے ہیں اور انہیں وہاں سے نکالنے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔ ریاستی حکومت نے اسکولس اور کالجس کو 6 ڈسمبر تک بند رکھنے کا اعلان کیا ہے ۔ حکومت نے بینکوں سے خواہش کی ہے کہ وہ پانی اور عوام کی مشکلات کو دیکھتے ہوئے اپنے اے ٹی ایمس کو کارکرد رکھیں اور یہاں رقومات کی موجودگی و دستیابی کو یقینی بنائیں۔ جہاں ائرپورٹ بند ہے وہیں یہ امید پیدا ہوگئی ہے کہ چینائی کے قریب اراکونم کے مقام پر کل محدود تجارتی پروازوں کو بحال کیا جاسکتا ہے ۔ یہ ائر فورس کا اڈہ ہے ۔ وزارت شہری ہوابازی نے بتایا کہ یہ محدود تجارتی پروازیں ائر انڈیا اور کچھ خانگی ائر لائینس کی ہونگی ۔ شہری ہوابازی کے سکریٹری آر این چوبے نے کہا کہ کم از کم چھ پروازوں کو کل اور پرسوں یقینی بنانے کیلئے منصوبے تیار کئے جا رہے ہیں۔ کہا گیا ہے کہ چینائی ائرپورٹ سے اراکونم کے مقام تک مسافرین کو منتقل کرنے کیلئے ہر 15 منٹ میں ایک شٹل ٹرین کا انتظام بھی کیا جا رہا ہے ۔

ریلویز کی جانب سے بھی راحت و امدادی کاموں کا سلسلہ جاری ہے ۔ ریلویز کی جانب سے متاثرین کو غذائی پیاکٹس ‘ ادویات وغْرہ فراہم کی جا رہی ہیں اور مختلف اسٹیشنوں پر انہیں پناہ بھی دی جا رہی ہے ۔ ریلویز نے کچھ اسٹیشنوں کو متاثرین کے قیام کیئے مختص کردیا گیا ہے ۔ وزیر ریلوے سریش پربھو نے دہلی میں یہ بات بتائی ۔ ملک کی مسلح افواج ‘ بحریہ اور ائر فورس نے اپنی سرگرمیوں کو جاری رکھتے ہوئے کئی پروازوں کا اہتمام کیا اور تقریبا 5000 افراد کو جو پانی میں محصور تھے مختلف مقامات پر پہونچایا ۔ این ڈی آر ایف کی چار ٹیموں کے علاوہ ہندوستانی فوج کے ایک کالم کو بھی متاثرہ علاقوں میں امدادی سرگرمیوں میں مصروف کردیا گیا ہے ۔ یہاں ہیلی کاپٹرس سے امدادی و بچاؤ کام تیزی سے جاری ہیں۔ فوج نے جملہ 40 امدادی اور بچاؤ ٹیموں کو متعین کیا ہے ۔ علاوہ ازیں آندھرا پردیش حکومت کی مدد کیلئے تروپتی میں بھی ایک ہیلی کاپٹر کو تیار رکھا گیا ہے ۔

اس دوران چیف منسٹر ٹاملناڈو جے جئے للیتا نے آج وزیر اعظم نریندر مودی سے مطالبہ کیا کہ وہ سیلاب متاثرین کی امداد کیلئے فوری طور پر 5000 کروڑ روپئے کی امداد فراہم کریں۔ جئے للیتا نے نریندر مودی کے ساتھ چینائی ‘ کانچی پورم ‘ تھروالور اور کڈلور اضلاع کا فضائی سروے کرنے کے بعد یہ مطالبہ کیا ۔ ایک اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ چیف منسٹر نے فوری طور پر 5000 روپئے کی امداد کا مطالبہ کیا ہے ۔ تاہم وزیر اعظم نے فوری طور پر ایک ہزار کروڑ روپئے کی امداد کا اعلان کیا ہے ۔ سیلاب زدہ علاقوں کا فضائی سروے کرنے کے بعد انہوں نے بحریہ کی پٹی پر ایک سطری بیان میں کہا کہ حکومت ہند کی جانب سے فوری طور ر 1000 کروڑ روپئے جاری کئے جائیں گے۔ یہ رقم مرکز کی جانب سے قبل ازیں جاری کردہ 940 کروڑ روپئے کے علاوہ ہوگی۔ گورنر کے روشیا اور چیف منسٹر جیہ للیتا کے ہمراہ نریندر مودی نے ٹامل زبان میں ایک سطری حملہ کہتے ہوئے مختصر بیان دیا اور ٹامل عوام سے کہا کہ میں آپ کی مدد کیلئے آیا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ سیلاب سے تباہی آئی ہے اور یہ مانسون کے قہر کا نتیجہ ہے۔ اس نازک گھڑی میں ٹاملناڈو کے عوام کے ساتھ ہندوستانی عوام بھی کھڑے ہیں۔ چینائی میں بارش کی تباہ کاریوں اور سیلاب کے نقصانات کا مرکزی کابینی سکریٹری نے دہلی میں منعقدہ ایک اجلاس میں جائزہ لیا اور کہا کہ اس بات کو یقینی بنانے اقدامات کئے جا رہے ہیں کہ متاثرین کو بروقت راحت و امداد پہونچائی جاسکے ۔ علاوہ ازیں نیشنل کرائسس مینجمنٹ کمیٹی نے بھی ٹاملناڈو میں سیلاب کی صورتحال کا جائزہ لیا ۔ کابینی سکریٹری پی کے سنہا نے حکام کے ساتھ صورتحال کا جائزہ لیا اور راحت کاری کو تیز کرنے کی ضرورت پر زور دیا ۔

TOPPOPULARRECENT