چینی فوج میں اضافہ سے امریکی بحریہ کی طلایہ گردی غیر متاثر

یو ایس ایس کارل ولسن کے عرشہ سے۔18فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) امریکی افواج چین کی فوج میں اضافہ سے جنوبی بحرچین میں چینی ساختہ جزیروں میں طلایہ گردی سے باز نہیں رہیں گے ۔ متنازعہ آبی حدود میں بین الاقوامی قانون امریکہ کو اس کی اجازت دیتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ متنازعہ آبی حدود بین الاقوامی آبی حدود ہے اور امریکی بحریہ امریکی طیارہ بردار بحری جہاز ایف۔18 لڑاکا طیاروں کے ساتھ اس علاقہ میں موجود ہے ۔ لیفٹننٹ کمانڈر ٹم ہاکسن نے اخباری نمائندوں سے اپنے جہاز کے عرشہ پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 70سال سے امریکی بحریہ اس علاقہ کو تحفظ فراہم کرتا آیا ہے اور اب بھی ضمانت دیتا ہے کہ جو بحری جہاز اس اہم سمندر میں داخل ہوں گے ان کا مکمل تحفظ کیا جائے گا ۔ صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ برسراقتدار آنے کے بعد جنوب مشرقی ایشیائی عہدیداروں نے اس بات کو غیر یقینی بنادیا کہ یہاں پر سمندر کی گہرائی کتنی ہونی چاہیئے ‘ امریکہ کا چین کے ساتھ جنگ کرنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے لیکن وہ اپنے مشرق بعید کے پڑوسی سے جنگ کرنے کے اندیشہ سے طلایہ گردی بند نہیں کرے گا ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT