Thursday , December 14 2017
Home / Top Stories / چین میں طوفان ’’ساوڈلر‘‘ کی تباہ کاری ، لاکھوں افراد کا تخلیہ

چین میں طوفان ’’ساوڈلر‘‘ کی تباہ کاری ، لاکھوں افراد کا تخلیہ

تائیوان میں درخت جڑ سے اُکھر گئے ، تودے گرنے کے واقعات ، پروازیں منسوخ ، طوفان کی صوبہ فوجیان کی سمت پیشرفت

بیجنگ ۔ 8 اگسٹ ۔(سیاست ڈاٹ کام) چین میں طوفان ساوڈلر ، کافی تباہی مچارہا ہے اور 1.58 لاکھ سے زائد افراد کا تخلیہ کردیا گیاہے ۔ 2009 ء کے بعد سے اب تک کا یہ بدترین طوفان ملک کے جنوب مشرقی فوجیان صوبے کی سمت بڑھ رہا ہے جہاں توقع ہے کہ زبردست بارش ہوگی ۔ یہ صوبہ ابنائے تائیوان کے ساحل پر واقع ہے اور جاریہ سال کا یہاں 13 واں طوفان ہے ۔ طوفان ساوڈلر 200 کیلومیٹر سے زائد فی گھنٹہ کی رفتار سے بڑھ رہا ہے ۔ یہاں سے عوام کا تخلیہ کردیا گیا ہے جن میں اکثریت آبی شعبہ سے وابستہ کسانوں کی ہے ۔ سرکاری خبررساں ایجنسی ژنہوا نے یہ اطلاع دی ۔ برن پولیس نے کل صوبہ کے ایک چھوٹے جزیرہ میں 55 یونیورسٹی طلبا اور ٹیچرس کو بچالیا ۔ وہ گرمائی کیمپس میں شریک تھے کہ تیز و تند صوبوں کی وجہ سے تمام کشتیوں کی خدمات روک دی گئی تھیں اور وہ اس جزیرہ میں ہی پھنسے رہ گئے ۔ برین پولیس نے جزیرہ پہنچ کر تمام 55 افراد کو آج بحفاظت ساحل پر لے آئی ۔ حکام نے ماہی گیروں کو 10 بجے صبح ہی واپس ہوجانے اور سمندر میں مچھلیاں نہ پکڑنے کی ہدایت دی ہے کیونکہ سمندری موجوں میں شدت اور بلند لہروں کی پیش قیاسی کی گئی تھی ۔ پڑوسی صوبہ گوانگ ڈانگ میں بھی ماہی گیروں کو اپنی کشتیاں سمندر میں نہ لے جانے کی ہدایت دی گئی ۔ مشرقی علاقہ میں سمندر کے کنارے سیاحتی مقام کو عارضی طورپر بند کردیا گیا ہے ۔ تائیوان میں طوفان ساوڈلر کی وجہ سے 10افراد ہلاک ہوگئے اور بڑے پیمانہ پر تباہی ہوئی ہے ۔ مشرقی ساحل میں آج شروع ہوئے طوفان نے سارے وسطی تائیوان کو اپنی لپیٹ میں لے لیا اور اس کی وجہ سے کئی درخت جڑ سے اُکھر گئے ، ایک دیہات میں مٹی کے تودے گرنے کی وجہ سے تباہی ہوئی ۔ تقریباً 7 لاکھ مکانات میں برقی سربراہی منقطع ہوگئی ہے ۔ تائیوان کے بیشتر علاقے زیرآب ہوچکے ہیں۔ یہاں بھی ہزاروں افراد کا تخلیہ کرادیا گیا ہے ۔ تقریباً 80 انٹرنیشنل فلائیٹس منسوخ کردی گئی ہیں اور تیز رفتار ٹرین خدمات کو روک دیا گیا ہے۔ یہ طوفان اس قدر شدید تھا کہ 237 کیلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے تیز ہوائیں چل رہی تھیں۔ ایک معمر شخص نے کہاکہ اس نے 60 سال کی عمر میں اب تک اتنا طاقتور طوفان نہیں دیکھا۔

TOPPOPULARRECENT