Saturday , November 18 2017
Home / دنیا / چین میں ہاسپٹل کا جبری انہدام۔ اسٹاف زخمی، سازوسامان تباہ

چین میں ہاسپٹل کا جبری انہدام۔ اسٹاف زخمی، سازوسامان تباہ

بیجنگ۔ 8 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) وسطی چین میں بلڈوزروں کے ذریعہ ایک ہاسپٹل کی عمارت اور اس سے متصلہ مردہ خانے کو منہدم کردیا گیا جس سے وہاں افراتفری پھیل گئی اور مریضوں کے علاوہ ڈاکٹرس اور نرسیس بھی یہاں وہاں بھاگنے لگے۔ انہدامی کارروائی میں مردہ خانہ میں موجود چھ نعشیں ملبہ میں دفن ہوگئیں۔ سرکاری ژینہوا خبر رساں ایجنسی کے مطابق اس کارروائی کے لئے ہاسپٹل نے مقامی حکومت کو موردالزام ٹھہرایا ہے کیونکہ سڑک کی توسیع پروگرام کیلئے ہاسپٹل انتظامیہ نے ہاسپٹل کی جزوی انہدام کی درخواست مسترد کردی تھی۔ ژینگژو یونیورسٹی موقوعہ صوبہ ہنان کے نمبر 4 ہاسپٹل میں غیرمتوقع طور پر انہدامی کارروائی شروع کی گئی جس میں مردہ خانے میں موجود چھ نعشیں ملبہ میں دفن ہوگئیں۔ انہدامی کارروائی میں 20 ملین یوان کے طبی آلات اور سازوسامان کو نقصان پہنچا جبکہ ہاسپٹل کے کئی اسٹاف ارکان زخمی بھی ہوئے۔ عام طور پر ایسا ہوتا ہے کہ کسی عمارت کے انہدام کیلئے قبل از وقت نوٹس دی جاتی ہے تاکہ وہاں سے تمام لوگوں کو اور سازوسامان کو ہٹا دیا جائے تاکہ کارروائی کے دوران کوئی جانی یا مالی نقصان نہ ہو۔ چین میں جبری انہدام ایک عام بات ہے کیونکہ مقامی حکومت اپنی معیشت کو مستحکم کرنے رئیل اسٹیٹ پر زائد انحصار کرتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT