Thursday , January 17 2019

چین پر دنیا کا کوئی بھی ملک حکم نہیں چلا سکتا : جن پنگ

بیجنگ ۔ 18 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) صدر چین ژی جنگ پنگ نے منگل کے روز اپنے اس عزم کو دہرایا کہ وہ چین کو درکار اصلاحات پر عمل آوری کرکے ہی دم لیں گے تاہم انہوں نے یہ انتباہ بھی دیا کہ چین کو کیا کرنا چاہئے اور کیا نہیں اس کا فیصلہ خود چین کرے گا کوئی اور ملک چین پر حکم چلانے کی کوشش نہ کرے۔ یاد رہیکہ چین کی اس پالیسی کی کمیونسٹ پارٹی 40 ویں سالگرہ منارہی ہے اور اسی موقع پر اپنے خطاب کے دوران ژی جن پنگ نے یہ بات کہی اور ساتھ ہی ساتھ انہوں نے ان اصلاحات کو آگے بڑھانے کا بھی عزم ظاہر کیا جو چین کے سابق قائد آنجہانی ڈیننگ ژیاؤ پنگ نے ڈسمبر 1978ء میں متعارف کیا تھا۔ جن پنگ نے یہ بھی واضح کردیا کہ ’’ایک پارٹی کے نظام‘‘ کو تبدیل نہیںکیا جائے گا۔ اس تقریب کا اہتمام بیجنگ کے گریٹ ہال آف دی پیوپل میں کیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ چین میں سوشلزم کا پرچم ہمیشہ سے بلندی پر لہراتا رہا ہے اور اس سوشلزم کا سب سے اہم پہلو کمیونسٹ پارٹی آف چائنا کی قیادت ہے۔ یاد رہیکہ جن پنگ نے یہ تقریر ایک ایسے موقع پر کی جب امریکہ کے ساتھ تجارتی اور سفارتی محاذ پر چین کے زبردست اختلافات پائے جاتے ہیں۔ جن پنگ نے ایک بار پھر اپنی بات دہراتے ہوئے کہا کہ چین پر دنیا کا کوئی بھی ملک اپنی حکمرانی نہیں چلا سکتا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT