Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / ’’چین کے مانجھا ‘‘ کے استعمال اور فروخت پر امتناع

’’چین کے مانجھا ‘‘ کے استعمال اور فروخت پر امتناع

تہوار کے موقع پر مانجھا کے استعمال سے انسانوں اور پرندوں کو نقصان
حیدرآباد۔/13جنوری، ( پی ٹی آئی) پرندوں اور دیگر کو زخمی ہونے سے بچانے کیلئے حکومت تلنگانہ نے آج احکامات جاری کرتے ہوئے ’’چین کے مانجھا ‘‘ کے استعمال اور فروخت پر امتناع عائد کیا ہے۔ تہوار اور دیگر موقعوں پر چین کا تیار کردہ مانجھا استعمال نہیں کیا جاسکتا۔ حکومت کے یہ امتناعی احکام سنکرانتی کے موقع پر جاری کئے گئے ہیں جو جنوبی ہند کا سب سے بڑا تہوار ہے ۔ اس تہوار کے دوران بڑے پیمانے پر پتنگ بازی کی جاتی ہے۔ پتنگ بازی کیلئے چین کے مانجھا کا جو استعمال کیا جارہا ہے وہ نہایت ہی تیز اور نقصان دہ ہے اس سے انسان کے علاوہ پرندے پر زخمی ہورہے ہیں۔ اس معاملہ کا گہرائی سے جائزہ لینے کے بعد حکومت نے ماحولیات ( تحفظ) قانون 1986 کی دفعہ 5کے تحت یہ فیصلہ کیا ہے اور مانجھا کی فروخت ، ذخیرہ اور استعمال پر امتناع عائد کیا ہے۔ اس مانجھا کو عام طور پر ’ چینی ڈور ‘ کہا جاتا ہے۔ اس کا استعمال کرنے والے لوگ اکثر شدید زخمی ہورہے ہیں اور یہ مانجھا پرندوں کے علاوہ جانوروں کیلئے بھی نقصاندہ بن رہا ہے۔ مرکزی وزارت ماحولیات ، جنگلات اور فضائی آلودگی نے تمام ریاستوں کو مطلع کیا ہے کہ وہ پتنگ بازی کے دوران پرندوں کو پہنچنے والے نقصان سے گریز کیا جائے۔ چین کا مانجھا استعمال کرنے سے ایسے واقعات رونما ہورہے ہیں۔ تمام متعلقہ محکمہ جات کو بھی فوری کارروائی کیلئے ہدایت دی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT