Monday , September 24 2018
Home / دنیا / ڈالاس کی فائرنگ کا مشتبہ حملہ آور پولیس کے ہاتھوں ہلاک

ڈالاس کی فائرنگ کا مشتبہ حملہ آور پولیس کے ہاتھوں ہلاک

ہوسٹن۔14جون ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک شخص جس نے پولیس ہیڈ کوارٹرس پر اندھا دھند فائرنگ کی تھی اور عمارت کے باہر دھماکو مادے نصب کئے تھے ۔ ایک تعاقب کے دوران پولیس کے نشانہ بازوں کے ہاتھوں گولی مار کر ہلاک کردیا گیا ۔ وہ ایک بکتر بند گاڑی میں سوار ہوکر فرار ہورہا تھا جس کا کئی گھنٹے تعاقب کیا گیا ۔ مشتبہ شخص نے مبینہ طور پر کئی بم ہیڈکوارٹرس

ہوسٹن۔14جون ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک شخص جس نے پولیس ہیڈ کوارٹرس پر اندھا دھند فائرنگ کی تھی اور عمارت کے باہر دھماکو مادے نصب کئے تھے ۔ ایک تعاقب کے دوران پولیس کے نشانہ بازوں کے ہاتھوں گولی مار کر ہلاک کردیا گیا ۔ وہ ایک بکتر بند گاڑی میں سوار ہوکر فرار ہورہا تھا جس کا کئی گھنٹے تعاقب کیا گیا ۔ مشتبہ شخص نے مبینہ طور پر کئی بم ہیڈکوارٹرس کے باہر نصب کئے تھے اور اسکواڈ کی کاریں حملہ کے دوران فائرنگ کررہی تھی ۔ 12گھنٹے سے زیادہ طویل تعاقب کے بعد مشتبہ حملہ آور کو گولی مار کر ہلاک کردیا گیا ۔ عہدیداروں کی اس کی شناخت جیمس ایل بولویر ‘ عمر 35سال متوطن پیرس ساکن ٹکساس ( ڈالاس ) کی گئی ہے ۔ ڈالاس پولیس کے بموجب کئی گھنٹے تک اس کے ساتھ سودے بازی کی گئی اور مشتبہ شخص سے ہتھیار ڈال دینے کیلئے کہا گیا لیکن بعد ازاں اس سے رابطہ منقطع ہوگیا ۔ حملہ آور اپنی ویان میں مردہ دستیاب ہوا ۔ سرکاری طور پر یا عینی شاہدین میں اس کی موت یا زخمی ہونے کا منظر نہیں دیکھا ۔

فائرنگ کا تبادلہ ہیڈ کوارٹر کے باہر شروع ہوا تھا اور اس کا سلسلہ پارکنگ کے مقام اور وہاں سے مضافاتی علاقہ میں ایک رسٹورنٹ تک جاری رہا جب کہ حملہ آور نے فرار ہونے کی کوشش کی۔ پولیس عہدیداروں نے گاڑی پر 50 کیلیبر کی رائفلس سے فائرنگ کی تھی ۔ پانچ بجے صبح پولیس کے نشانہ بازوں نے ویان کے ونگ شیلڈ پر فائرنگ کرتے ہوئے مشتبہ حملہ آور کو ہلاک کردیا ۔ ایک پریس کانفرنس میں ڈالاس کے فوجی سربراہ ڈیوڈ براؤن نے کہا کہ فائرنگ کا آغاز کل 12.30بجے دن ہوا تھا ۔ مشتبہ شخص جو پولیس ہیڈکوارٹر کے روبرو اپنی کار کھڑی کر کے بیٹھا ہوا تھا ۔ اندھا دھند فائرنگ کا آغاز کیا تھا ۔ پولیس کو پہلے شبہ ہوا تھا کہ حملہ آور کئی ہیں لیکن بعد ازاں انہیںیقین ہوگیا کہ حملہ آور صرف ایک ہے ۔بندوق بردار نے مختلف مقامات پر فائرنگ کی اور ایک بکتربند ویان میںسوار ہوکر فرار ہونے کی کوشش کی ۔ ابتداء میں فائرنگ کے تبادلہ کے بعد پولیس گاڑیوں کے ایک قافلہ میں حملہ آور کا تعاقب کیا جو مضافاتی علاقہ ہچنس کے ایک پارکنگ لاٹ تک جاری رہا جو پولیس ہیڈ کوارٹر 12میل کے فاصلہ پر ہے ۔ پولیس نے کہا کہ انہیںیقین ہے کہ مشتبہ حملہ آور کا مقصد پولیس عہدیداروں کا قتل تھا ۔ اس کے ارادے ناکام ہوگئے ۔ اسے گولی مار کر ہلاک کرنے سے پہلے حملہ آور نے ٹیلی فون پر پولیس کو اپنی شناخت بتائی تھی ۔ پولیس کے بموجب مشتبہ حملہ آور نے بار بار پولیس عہدیداروں سے کہا تھا کہ اس کے فرزند کی پولیس حراست میں موت کی پولیس ہی ذمہ دار ہے ۔

اُس نے پولیس عہدیداروں کو دہشت گرد قرار دیا تھا ۔ مقامی ذرائع ابلاغ کی خبروں کے بموجب 2013ء میں مشتہ حملہ آور کو گرفتار کیا گیاتھا اور رہائی کے بعد اس نے آتشی ہتھیار حاصل کئے تھے ۔ کولمبیا سے موصولہ اطلاع کے بموجب ایک مکان میں جو اوہایو میںواقع ہے فائرنگ سے کم از کم چار افراد ہلاک اور ایک کم عمر بچی زخمی ہوگئی ۔ پولیس سرجنٹ نے کہا کہ زخمی بچی قیام گاہ کے باہر دستیاب ہوئی جب کہ تلاشی مہم کے دوران دومردوں اور دو عورتوں کی نعشیں برآمد ہوئیں ۔ سرجنٹ ڈیوڈ سسلیان کولمبیا قتل اسکواڈ کے بموجب انہیں اندیشہ ہے کہ مشتبہ شخص کسی کو بھی ہلاک کر کے خوفزدہ نہیں ہوا تھا ۔ اُس کی فوری تلاش ضروری ہے ۔ علاقہ کے ذمہ دار افراد سے مدد کی اپیل کی گئی ہے ۔ پولیس کو ہنوز مشتبہ شخص کے بارے میں کوئی سراغ حاصل نہیں ہوا ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT