Wednesday , December 13 2017
Home / شہر کی خبریں / ڈبل بیڈ روم مکانات پر جی ایس ٹی زیادہ اثر انداز نہیں

ڈبل بیڈ روم مکانات پر جی ایس ٹی زیادہ اثر انداز نہیں

حیدرآباد 19 ستمبر (سیاست نیوز) ڈبل بیڈ روم مکانات پر جی ایس ٹی کا معمولی اثر پڑا ہے لہذا کنٹراکٹرس کو تشویش کا شکار ہونے کی ضرورت نہیں۔ محکمہ ہاؤزنگ کی اسپیشل پرنسپل سکریٹری چترا رامچندرن نے آج یہ بات کہی اور بتایا کہ ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیر کی نگرانی کے لئے ضلع سطح پر پراجکٹ مانیٹرنگ سسٹم قائم کیا جائے گا۔ آج فیڈریشن آف تلنگانہ اینڈ آندھراپردیش چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری میں ڈبل بیڈ روم مکانات کی اسکیم اور جی ایس ٹی پر اضلاع کے نوڈل آفیسرس، ایگزیکٹیو انجینئرس کا شعور بیداری اجلاس منعقد کیا گیا تھا۔ اِس پروگرام میں محکمہ ہاؤزنگ کی اسپیشل پرنسپل سکریٹری چترا رامچندرن، ریاستی سیلز ٹیکس کمشنر انیل کمار، جوائنٹ کمشنر سائی کشور، ہاؤزنگ کارپوریشن کے چیف انجینئر ستیہ مورتی کے علاوہ اضلاع کے نوڈل آفیسرس اور دیگر عہدیدار موجود تھے۔ سیلز ٹیکس کمشنر انیل کمار اور جائنٹ کمشنر سائی کشور نے جی ایس ٹی کے خدوخال بیان کرتے ہوئے شک و شبہات دور کرنے کی کوشش کی۔ اُنھوں نے بتایا کہ جی ایس ٹی پر عمل آوری سے قبل ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیر پر ویاٹ وصول کیا جارہا ہے لہذا جی ایس ٹی متعارف کرنے سے کوئی اثر نہیں پڑے گا۔ عام طور پر مکانات کی تعمیر میں 17 فیصد اخراجات، سمنٹ، اسٹیل اور دیگر ساز و سامان کے ہوتے ہیں۔ مابقی 30 فیصد مزدوری ہوتی ہے۔ دیہی علاقوں میں ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیر پر فی یونٹ 5.04 لاکھ روپئے کا خرچ آرہا ہے۔ جس وقت ویاٹ پر عمل کیا جارہا تھا تعمیری اخراجات 4.80 لاکھ روپئے تھے اور 24 ہزار روپئے بطور ویاٹ وصول کیا جارہا تھا۔

TOPPOPULARRECENT