Thursday , December 13 2018

ڈوکلام میں کوئی بھی صورتحال سے نمٹنے تیار ہیں، نرملا کا ادعا

مسلح افواج کی جدید کاری پر کام مسلسل جاری۔ فوجیوں کی بہبود کے لیے حکومت ہند پابند عہد، اترکھنڈ میں وزیر دفاع کا خطاب

دہرہ دون/ بیجنگ۔ 26 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) وزیر دفاع نرملا سیتارامن نے کہا ہے کہ ہندوستان ’’چوکس‘‘ ہے اور ڈوکلام میں کوئی بھی غیر متوقع صورتحال سے نمٹنے کے لیے تیار بھی ہے۔ وزیر دفاع اپنے عہدے کا جائزہ لینے کے بعد پہلی مرتبہ اترکھنڈ کے دورے پر ہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ حکومت افواج کی جدید کاری کے سلسلہ میں مسلسل کام کررہی ہے۔ انہوں نے گزشتہ روز ممتاز فوجیوں، ان کی بیوائوں اور سینئر فوجیوں کے خاندانوں کے اعزاز میں یہاں چیف منسٹر کی قیامگاہ پر منعقدہ تقریب کے موقع پر میڈیا والوں سے بات چیت میں کہا کہ ہم ڈوکلام میں کسی بھی ممکنہ صورتحال سے نمٹنے کے لیے تیار ہیں اور بدستور چوکس ہیں۔ ہم ہماری فورسس کو عصری تقاضوں کے مطابق اسلحہ سے لیس کرنے کے لیے کام کررہے ہیں۔ ہم ہماری علاقائی سالمیت کو برقرار رکھیں گے۔ ہندوستان اور چین گزشتہ سال 16 جون کو ڈوکلام میں 73 روزہ تعطل سے نبردآزما رہے جبکہ ہندوستان کی طرف سے متنازعہ علاقے میں چینی آرمی کی جانب سے ایک سڑک کی تعمیر کو روکا گیا تھا۔ وہ کشمکش 28 اگست کو اختتام پذیر ہوئی۔ نرملا نے کہا کہ اترکھنڈ نہ صرف بھگوانوں کی سرزمین ہے بلکہ یہ جیالوں کا خطہ بھی ہے۔ جنہوں نے ہمیشہ ملک کی مسلح افواج میں نمایاں حصہ ادا کیا ہے۔ میں ان جیالوں کو سلام کرتی ہوں۔ انہوں نے کہا کہ ایک دو نہیں بلکہ اترکھنڈ کے 21 بہادر سپوتوں کو پرم ویر چکر سے نوازا گیا ہے جو ملک کا اعلی ترین فوجی اعزاز ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس ریاست میں بہادر فوجی آدمی ہے جنہیں ’وکٹوریہ کراس‘ سے نوازا گیا نیز ان کے خاندانوں کو مسلح افواج میں تین تین نسلوں سے خدمات انجام دینے کا اعزاز بھی حاصل ہے۔ اترکھنڈ کے ہر خاندان کا کم از کم ایک رکن مسلح افواج میں خدمات انجام دیتا ہے۔ تاکہ موجودہ فوجی سربراہ کا تعلق اترکھنڈ سے ہے۔ یہ واقع فخر کا معاملہ ہے۔ این ڈی اے اور آئی ایم اے کیڈٹس سے خطاب میں نرملا سیتارامن نے کہا کہ یہ لوگ نہایت عصری فورس کا حصہ بننے جارہے ہیں جن کے لیے وزیراعظم نریندر مودی کی طرف سے متعدد اقدامات شروع کیے گئے ہیں جن کا مقصد آرمی، نیوی اور ایرفورس کو جدید بنانا ہے۔ نرملا نے نہرو انسٹی ٹیوٹ آف مائونٹینیئرنگ کے ڈائرکٹر کرنل اجئے کوتھیال کی ستائش کی کہ وہ مقامی نوجوانوں کو تربیت دیتے ہوئے مسلح افواج میں خدمات انجام دینے کے قابل بنارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان جیسے شخصیتوں کی وجہ سے ہر کسی کو حوصلہ ملتا ہے۔ فوجی جوانوں، عہدیداروں اور ان کے خاندانوں کی بہبود کے لیے مرکز کے اقدامات اور عہد سے واقف کراتے ہوئے وزیر دفاع نے بتایا کہ اترکھنڈ کے پہاڑی علاقوں میں جدید سہولتوں سے آراستہ کمانڈ ہاسپٹل تعمیر کرنے کا منصوبہ ہے۔ فوجی سربراہ جنرل بپن راوت نے بھی کیڈٹس سے خطاب کیا اور کہا کہ انہیں اترکھنڈ کا دورہ کرتے ہوئے ہمیشہ فخر محسوس ہوتا ہے۔ چیف منسٹر تریویندر سنگھ راوت نے اترکھنڈ کے 140 نوجوانوں کو تہنیت پیش کی جو آئی ایم اے اور این ڈی اے کے لیے کوالیفائی ہوچکے ہیں۔ اسناد اور فی کس 50 ہزار روپئے کے چیکس دیئے گئے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT