Wednesday , December 13 2017
Home / شہر کی خبریں / ڈگ وجئے سنگھ کو تلنگانہ میں داخل ہونے نہ دیا جائے گا

ڈگ وجئے سنگھ کو تلنگانہ میں داخل ہونے نہ دیا جائے گا

تلنگانہ پولیس کے خلاف بیان واپس لینے پر زور ، مختلف کارپوریشن کے مسلم صدور کا بیان
حیدرآباد ۔ 2 ۔ مئی (سیاست نیوز) تلنگانہ میں مختلف کارپوریشنوں کے مسلم صدور نشین اور ڈپٹی میئر گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن نے جنرل سکریٹری اے آئی سی سی ڈگ وجئے سنگھ کو خبردار کیا کہ وہ تلنگانہ پولیس کے خلاف دیئے گئے اپنے بیان سے فوری دستبرداری اختیار کرلیں ورنہ تلنگانہ میں داخلے کی اجازت نہیں دی جائے گی ۔ صدر نشین اقلیتی فینانس کارپوریشن سید اکبر حسین ، صدر نشین کھادی اور ولیج انڈسٹریز بورڈ یوسف زاہد، صدرنشین سٹ ون عنایت علی باقری، صدرنشین تلنگانہ انڈسٹریل ڈیولپمنٹ کارپوریشن برہان بیگ اور ڈپٹی میئر بابا فصیح الدین نے آج مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ڈگ وجئے سنگھ کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ پولیس کے خلاف بے بنیاد الزام تراشی کے ذریعہ ڈگ وجئے سنگھ نے اپنے ذہنی دیوالیہ پن کا ثبوت دیا ہے۔ دراصل تلنگانہ میں حکومت کو مسلمانوں کی مکمل تائید سے کانگریس پارٹی بوکھلاہٹ کا شکار ہے۔ ان قائدین نے کہا کہ بے بنیاد الزامات کا مقصد پولیس کے حوصلوں کو پسند کرنا اور مسلمانوں میں پولیس کے بارے میں شبہات پیدا کرنا ہے۔ ان قائدین نے کہا کہ کانگریس پارٹی کو چاہئے کہ وہ ڈگ وجئے سنگھ کے اس غیر ذمہ دارانہ بیان کا نوٹ لے اور انہیں پارٹی سے برطرف کردے۔ سید اکبر حسین نے کہا کہ کے سی آر کی قیادت میں ٹی آر ایس حکومت اقلیتوں کی بھلائی کیلئے جو اقدامات کر رہی ہے ، اس کی مثال ملک کی کوئی اور ریاست پیش نہیں کرسکتی۔ مسلمانوں کیلئے 12 فیصد تحفظات ، تعلیمی ترقی کیلئے اقامتی اسکولس اور غریب لڑکیوں کی شادی کیلئے امدادی اسکیم کا آغاز ایسے کارنامے ہے جو ہمیشہ یاد رکھے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان اس قسم کے گمراہ کن بیانات کا شکار نہیں ہوں گے اور ڈگ وجئے سنگھ کو مناسب سبق سکھائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی کے اقلیتی قائدین کو جان لینا چاہئے کہ ڈگ وجئے سنگھ کے بیان کے باعث تلنگانہ میں اقلیتوں کی رہی سہی تائید بھی ختم ہوچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس دور حکومت میں فسادات اور عوام پر مظالم کے واقعات عام تھے لیکن ٹی آر ایس برسر اقتدار آنے کے بعد سے فسادات کا سلسلہ ختم ہوچکا ہے ۔ ڈپٹی میئر بابا فصیح الدین نے کہا کہ کانگریس پارٹی کے الفاظ ڈگ وجئے سنگھ کے زبان سے ادا ہوئے ہیں۔ کانگریس تلنگانہ میں اپنی شکست کے باعث بوکھلاہٹ کا شکار ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کے اقلیتی قائدین کو چاہئے کہ وہ پارٹی سے دوری اختیار کرلیں کیونکہ ڈگ وجئے سنگھ کے بیان سے تلنگانہ میں کانگریس کا صفایا یقینی ہے ۔ حکومت کی مختلف اسکیمات کا حوالہ دیتے ہوئے بابا فصیح الدین نے کہا کہ مسلمانوں کو کے سی آر اور ٹی آر ایس سے دور نہیں کیا جاسکتا۔ ڈگ وجئے سنگھ جو خود چیف منسٹر کے عہدہ پر فائز رہ چکے ہیں، اس طرح کے ذیر ذمہ دارانہ بیانات سے گریز کرنا چاہئے ۔ یوسف زاہد اور عنایت علی باقری نے بھی ڈگ وجئے سنگھ کو سخت تنقید کانشانہ بناتے ہوئے غیر مشروط معذرت خواہی کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں کانگریس زوال کا شکار ہے اور ڈگ وجئے سنگھ جیسے قائدین کے سبب پارٹی کو مزید نقصان ہوگا۔ ان قائدین نے کہا کہ تلنگانہ پولیس مکمل غیر جانبداری کے ساتھ فرائض انجام دے رہی ہے اور فرینڈلی پولیس کے معاملہ میں مختلف ممالک نے تلنگانہ پولیس کی ستائش کی ہے۔ پولیس پر دہشت گرد تنظیم کا فرضی ویب سائیٹ چلانے کا الزام انتہائی بدبختانہ ہے۔

TOPPOPULARRECENT