Thursday , November 23 2017
Home / شہر کی خبریں / ڈی ناگیندر کے کانگریس اور ٹی آر ایس کو تجاویز، کل سیاسی مستقبل کا فیصلہ

ڈی ناگیندر کے کانگریس اور ٹی آر ایس کو تجاویز، کل سیاسی مستقبل کا فیصلہ

کانگریس میں برقراری اور ٹی آر ایس میں شمولیت کیلئے دونوں پارٹیوں کی مساعی
حیدرآباد ۔ 5 ڈسمبر (سیاست نیوز) ڈی ناگیندر کا مسئلہ سیاسی حلقوں میں معمہ بنا ہوا ہے۔ ایک پیر کانگریس تو دوسرا ٹی آر ایس میں ہے۔ دونوں جماعتوں کیلئے چند تجاویز پیش کرنے والے ڈی ناگیندر 7 ڈسمبر کو اپنے مستقبل کا فیصلہ کریں گے۔ اس میں شک نہیں آنجہانی پی جناردھن ریڈی کے بعد ڈی ناگیندر اپنا کیڈر رکھنے والے قائد ہیں، جس کی وجہ سے کانگریس جہاں انہیں اپنی پارٹی میں برقرار رکھنے کی کوشش کررہی ہے دوسری طرف حکمراں انہیں ٹی آر ایس میں شامل کرنے کی جدوجہد کررہی ہے۔ یہی وجہ ہیکہ سابق ریاستی وزیر و صدر گریٹر حیدرآباد سٹی کانگریس کمیٹی مسٹر ڈی ناگیندر سیاسی خلا بازیاں مارنے کا کوئی بھی بہانہ ضائع نہیں کررہے ہیں۔ حکمران ٹی آر ایس اور اصل اپوزیشن کانگریس کو اپنے اردگرد گھماتے ہوئے سیاسی میدان میں اپنی طاقت کا مظاہرہ پیش کررہے ہیں۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلا ہیکہ مسٹر ڈی ناگیندر کا جھکاؤ ٹی آر ایس کی طرف ہے اور ان کے حامی بھی انہیں ٹی آر ایس میں شامل ہونے کا مشورہ دے رہے ہیں۔ سیاسی حلقوں میں یہ افواہیں گشت کررہی ہیں کہ مسٹر ڈی ناگیندر نے اپنے سیاسی استاد مشیر تلنگانہ حکومت مسٹر ڈی سرینواس کی قیامگاہ پر ٹی آر ایس کے وزراء اور دوسرے قائدین سے ملاقات کی ہے۔ ٹی آر ایس کے قائدین نے انہیں پارٹی میں شامل ہونے پر میئر کا پیشکش کیا ہے یا ایم ایل سی بنانے پر غور کرنے کا تیقن دیا ہے۔ تاہم مسٹر ڈی ناگیندر اس کے علاوہ گریٹر حیدرآباد میں 150 ڈیویژنس پر امیدواروں کے انتخاب میں ان کی رائے کو اہمیت دینے کے علاوہ دوسرے تجاویز پیش کئے ہیں۔ ٹی آر ایس کے قائدین نے انہیں چیف منسٹر کے سی آر سے تبادلہ خیال کرنے کے بعد قطعی جواب دینے کا تیقن دیا ہے۔ کل ڈی ناگیندر اپنی قیامگاہ پر اپنے حامیوں کے ساتھ مشاورت کررہے تھے۔ قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل مسٹر محمد علی شبیر اچانک ان کی قیامگاہ پہنچ گئے۔ ان سے تبادلہ خیال کرنے کے بعد مسٹر محمد علی شبیر نے اپنی طرف سے ضمانت دی کہ مسٹر ڈی ناگیندر کانگریس میں رہیں گے لیکن ڈی ناگیندر نے پارٹی میں برقرار رہنے کا کوئی تیقن نہیں دیا صرف اتنا کہا کہ پارٹی تبدیل کرنے کیلئے ان پر دباؤ ہے۔ تاہم وہ  7 ڈسمبر اپنے فیصلے سے واقف کروائیں گے۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلا ہیکہ مسٹر ڈی ناگیندر انہیں صرف حیدرآباد تک محدود رکھنے کے خلاف ہیں۔ گریٹر حیدرآباد سٹی کانگریس کمیٹی کا صدر ہونے کے باوجود ضلع رنگاریڈی میں ان کی مداخلت کو ضلع رنگاریڈی کانگریس قائدین کی مخالفت سے ناراض ہے۔ انہوں نے اس کی مسٹر ڈگ وجئے سنگھ سے بھی شکایت کی ہے مگر ابھی تک کوئی حل برآمد نہ ہونے کی وجہ سے وہ پارٹی سرگرمیوں سے دور ہیں۔ وہ کانگریس کو بھی گریٹر حیدرآباد کے 150 ڈیویژنس میں امیدوار کا انتخاب کرنے کا انہیں اختیار دینے پر زور دے رہے ہیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT