Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / کابل کی شیعہ مسجد میں داعش کا خودکش دھماکہ، 20 مصلیان جاں بحق

کابل کی شیعہ مسجد میں داعش کا خودکش دھماکہ، 20 مصلیان جاں بحق

۔50 شدید زخمی، طالبان کا اظہار بے تعلقی، خون خرابے کی مذمت کرنے علماء سے صدر اشرف غنی کی اپیل
کابل ۔ 25 اگست (سیاست ڈاٹ کام) افغان دارالحکومت کی ایک شیعہ مسجد میں آج نماز جمعہ کے موقع پر عسکریت پسندوں نے مصلیوں پر گولیوں کی بوچھار کردی اور دو خودکش دھماکے کردیا، جس کے نتیجہ میں کم سے کم 20 مصلیاں جاں بحق اور دیگر 50 شدید زخمی ہوگئے۔ ان میں بچوں کی کثیر تعداد بھی شامل ہے۔ ایک اعلیٰ پولیس عہدیدار محمد صادق مرادی کے مطابق دو حملہ آوروں نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔ دیگر دو کو افغانستان سیکوریٹی فورسیس نے گولی مار دی۔ افغانستان کی شیعہ اکثریت کو نشانہ بناتے ہوئے کئے گئے اس تازہ ترین حملے کی ذمہ داری آئی ایس آئی ایس (داعش) نے قبول کی ہے۔ تاہم طالبان نے اس تشدد کی مذمت کی۔ اس کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے ایک ٹیلیفون انٹرویو میں اسوسی ایٹیڈ پریس سے کہا کہ ان کے گروپ کا اس حملے سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ افغان صدر اشرف غنی نے اس تشدد کی مذمت کی اور کہا کہ عسکریت پسند اب عبادت گاہوں کو نشانہ بنارہے ہیں کیونکہ وہ میدان جنگ میں ہار چکے ہیں۔ انہوں نے علمائے اسلام سے اس خون خرابہ کی سخت مذمت کرنے کی اپیل بھی کی ہے۔

کابل ہاسپٹل کے سربراہ محمد سلیم رسولی نے اندیشہ ظاہر کیا کہ مہلوکین کی تعداد میں اضافہ ہوسکتا ہے کیونکہ کئی زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے۔ تازہ ترین حملے سے افغانستان میں امن و سلامتی کی بگڑتی ہوئی صورتحال کا اندازہ ہوتا ہے۔ اس مسجد میں تقریباً چار گھنٹوں تک کئے گئے حملے کے دوران بندوق چلنے اور دھماکوں کی آوازیں سنائی دی گئیں۔ عینی شاہدین نے کہا کہ کئی مصلیان کھڑکیاں توڑ کر بچ نکلنے میں کامیاب ہوگئے۔ شمالی کابل کے رہائشی علاقہ میں واقع شیعہ مسجد نماز جمعہ کے پیش نظر مرد، خواتین اور بچوں سے کھچاکھچ بھری تھی کہ حملہ آوروں نے گھس کر پہلے بندوقوں سے اندھادھند فائرنگ کی بعدازاں دھماکے کئے گئے۔ وزارت داخلہ کے مطابق مسجد کے اطراف مسلح سیکوریٹی فورسیس کو تعینات کرتے ہوئے 100 مصلیان کو بحفاظت باہر نکال لیا گیا۔ وزارت داخلہ نے کہا کہ اس حملے میں 20 شہری ہلاک اور دیگر 50 زخمی ہوئے ہیں۔ علاوہ ازیں سیکوریٹی فورسیس کے دو اہلکار ہلاک اور دیگر 7 زخمی ہوئے ہیں۔ اس وزارت کے نائب ترجمان نجیب دانش نے کہا کہ ’’حملہ ختم ہوچکا ہے اور ہمارے پولیس اہلکار علاقہ کی صفائی کررہے ہیں۔ حملہ آوروں کو سیکوریٹی فورسیس نے ہلاک کردیا ہے‘‘۔

TOPPOPULARRECENT