Saturday , February 24 2018
Home / Top Stories / کابل کے مضافاتی شادی خانہ پر خودکش حملہ ، 9 ہلاک

کابل کے مضافاتی شادی خانہ پر خودکش حملہ ، 9 ہلاک

کابل۔ 16 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) ایک خودکش حملہ آور نے خود کو کابل کے مضافات میں واقع ایک شادی خانہ میں دھماکہ سے اُڑا لیا۔ شادی خانہ میں ایک سیاسی اجلاس جاری تھا۔ یہ حملہ واضح طور پر اسی پر کیا گیا تھا۔ فوری طور پر حملہ کی ذمہ داری کسی نے بھی قبول نہیں کی تاہم شورش پسندوں نے اپنی طاقت کے مظاہرے کے طور پر اپنے حملوں میں شدت پیدا کردی ہے۔ عطا محمد نور گورنر بلخ کے حامیوں نے کھل کر صدر افغانستان اشرف غنی پر تنقید کی ہے۔ حملے کے وقت شادی خانہ میں اجلاس جاری تھا۔ بم بردار نے عمارت میں داخل ہونے کی کوشش کی لیکن صیانتی چوکی پر اسے روک دیا گیا، جہاں اس نے دھماکو آلہ سے دھماکہ کردیا۔ کابل پولیس کے ترجمان عبدالباسط مجاہد نے کہا کہ مہلوکین میں پولیس کے کئی ملازمین شامل ہیں۔ وزارت داخلہ کے ترجمان نجیب دانش نے کہا کہ 7 ملازمین پولیس اور 2 شہری ہلاک ہوگئے۔ باب الداخلہ پر حملہ آور کی شناخت کے بعد اس نے بم دھماکہ کیا۔ دانش نے کہا کہ مزید 9 افراد زخمی بھی ہوئے جن میں 7 ملازمین پولیس بھی ہیں۔ ظہرانہ کے بعد جب لوگ باہر آرہے تھے تو حملہ ہوا۔ اجلاس میں شریک ہارون متعارف نے کہا کہ ہر طرف کانچ کے ٹکڑے اور نعشیں بکھری ہوئی تھیں۔ دہشت اور انتشار کا عالم تھا۔ ملازمین پولیس اور شہریوں کی نعشیں خون کے تالاب میں پڑی ہوئی تھیں۔ شادی خانے کی کھڑکیوں کے شیشے چکناچور ہوگئے اور باہر کھڑی ہوئی ایک کار شعلہ پوش ہوگئی۔ خفیہ پولیس کے عملہ نے علاقہ کی ناکہ بندی کردی اور پولیس کو بھی مقام واردات تک رسائی کی اجازت نہیں دی گئی۔

TOPPOPULARRECENT