Friday , December 15 2017
Home / جرائم و حادثات / کاروں کے سرقہ میں ملوث بین ریاستی ٹولی گرفتار

کاروں کے سرقہ میں ملوث بین ریاستی ٹولی گرفتار

مسروقہ کاروں کو حادثات کا شکار کاروں کی چیشی ، نمبر اور جعلی دستاویزات بنانے کا ریاکٹ
حیدرآباد۔ 8 ڈسمبر (سیاست نیوز) سنٹرل کرائم اسٹیشن (سی سی ایس) پولیس نے کاروں کے سرقہ میں ملوث بین ریاستی ٹولی کو بے نقاب کرتے ہوئے 6 ارکان کو گرفتار کرلیا۔ ایڈیشنل کمشنر پولیس (کرائمس) شریمتی سواتی لکرا نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ بین ریاستی ٹولی کا سرغنہ 38 سالہ ایس چکرادھر عرف ومشی کرشنا ہے جس کا تعلق ضلع رنگاریڈی سے ہے اور اس نے اپنے ساتھیوں کی مدد سے ایک ٹولی تشکیل دی اور ملک بھر میں آر ٹی اے ایجنٹس سے رابطہ قائم کرتے ہوئے حادثہ کی شکار کاروں کا پتہ لگاتے ہوئے انہیں ہراج میں کم قیمت پر حاصل کیا کرتا تھا اور بعدازاں ان گاڑیوں کے چیشی نمبر، انجن نمبر اور دیگر اہم پرزوں کو علیحدہ کرنے کے بعد کار کے ڈھانچوں کو اسکراپ میں فروخت کردیا کرتا تھا۔ چکرادھر نے اپنے دیگر ساتھیوں پی شیوا، جی رتناکشور، کے سرینواس راؤ، وی نصیب چند دامن، تنویر قسم بھگوان اور نظیر متوطن اُترپردیش کی مدد سے سرقہ کی ہوئی گاڑیوں کو حاصل کرنے کے بعد حادثہ کی شکار گاڑیوں کی تفصیلات بشمول انجن اور چیشی نمبر مسروقہ گاڑیوں پر نصب کرنے کے بعد خواہش مند گاہکوں کو استعمال شدہ گاڑیاں ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے انہیں فروخت کیا کرتا تھا۔ چکرادھر نے اُترپردیش کے اجیت سنگھ سے رابطہ قائم کیا اور اس کی مدد سے فرضی گاڑیوں کی دستاویزات بشمول انشورنس پالیسی تیار کرتے ہوئے انہیں آن لائن او ایل ایکس ڈاٹ اِن ویب سائیٹ پر فروخت کیا کرتا تھا۔ شریمتی سواتی لکرا نے مزید بتایا کہ چکرادھر ملک بھر میں بڑے پیمانے پر مسروقہ گاڑیوں کو فروخت کرنے کا نیٹ ورک قائم کیا اور شہر کے مضافاتی علاقہ ترکیمجال میں ایک رہائشی مکان حاصل کرکے وہاں پر مسروقہ گاڑیوں کے نمبر پلیٹس کی تبدیلی اور غیرقانونی سرگرمیوں کی مدد سے دونوں شہروں میں مسروقہ گاڑیاں فروخت کررہا تھا۔ انہوں نے بتایا کہ چکرادھر کو کمشنر ٹاسک فورس نے سال 2011ء میں اسی قسم کے واقعات میں ملوث ہونے پر گرفتار کیا تھا اور وہ جیل سے رہا ہونے کے بعد دوبارہ سرگرم ہوگیا۔ سی سی ایس پولیس نے چکرادھر اور اس کے پانچ ساتھیوں کو گرفتار کرتے ہوئے ان کے قبضہ سے 13 مسروقہ قیمتی کاریں برآمد کرلی اور اس سلسلے میں مزید تحقیقات جاری ہیں۔ شریمتی لکرا نے بتایا کہ بین ریاستی کاروں کے سرقہ میں ملوث ٹولی سے متعلق مزید تحقیقات کیلئے ٹولی کے ارکان کو عنقریب پولیس تحویل میں لیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT