Friday , September 21 2018
Home / ہندوستان / کاس گنج میں دوبارہ کشیدگی ، عبادت گاہ کا گیٹ نذر آتش

کاس گنج میں دوبارہ کشیدگی ، عبادت گاہ کا گیٹ نذر آتش

غفلت برتنے کے الزام میں دو کانسٹیبلس معطل ، بھاری پولیس جمعیت تعینات
کاس گنج ۔ 5 فبروری ۔(سیاست ڈاٹ کام) کاس گنج میں اُ س وقت دوبارہ کشیدگی پھیل گئی جب اشرار نے آج ایک عبادت گاہ کے گیٹ کو آگ لگادی لیکن پولیس فوری حرکت میں آگئی اور بھڑکتے شعلوں کو بجھادیا گیا ۔ اس واقعہ کے بعد دو کانسٹیبلس کو غفلت و لاپرواہی پر معطل کردیا گیا ۔ نیز مغربی اُترپردیش کے اس ٹاؤن میں جہاں حال ہی میں فرقہ وارانہ جھڑپیں ہوئی تھیں مزید گڑبڑ کے اندیشوں کو ختم کرتے ہوئے امن و امان کو یقینی بنانے کیلئے پولیس کا ایک بڑا جتھ تعینات کردیا گیا ہے ۔ سپرنٹنڈنٹ پولیس پیوش سریواستو نے کہاکہ ’’اس شہر کے گنج دودوارہ میں آج صبح کی اولین ساعتوں میں چند غیرسماجی عناصر نے ایک عبادت گاہ کے گیٹ کو آگ لگادی جس کے فوری بعد پولیس حرکت میں آگئی اور بھڑکتے شعلوں کو بجھادیا گیا ‘‘ ۔ سریواستو نے ضلع مجسٹریٹ آر پی سنگھ کے ساتھ اس مقام پر پہونچ کر صورتحال کا جائزہ لیا ۔ انھوں نے کہاکہ کانسٹیبل ہری شرن اور ناگیندر کو فرائض کی انجام دہی میں غفلت و لاپرواہی پر معطل کردیا گیاہے ۔ کاس گنج میں گزشتہ ماہ آر ایس ایس کے شعبہ تنظیم اکھل بھارتیہ ودیارتھی پریشد کی طرف سے نکالی گئی ترنگا یاترا کے دوران ابتدائی بحث و تکرار اور تشدد میں ایک نوجوان کی ہلاکت کے بعد فرقہ وارانہ جھڑپیں ہوئی تھیں۔ 22 سالہ چندن گپتا کو گولی مارکر ہلاک کئے جانے کے بعد پھوٹ پڑنے والے تشدد میں کم سے کم تین دوکانات ، دو بسوں اور ایک کار کو نذر آتش کردیا گیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT