Friday , December 15 2017
Home / اضلاع کی خبریں / کاغذ نگر میں ’’فیکٹری بچاؤ کمیٹی‘‘ کی تشکیل

کاغذ نگر میں ’’فیکٹری بچاؤ کمیٹی‘‘ کی تشکیل

تلگودیشم لیڈر آر سرینواس چیئرمین منتخب
کاغذ نگر /9 اگست (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) براعظم ایشیا کی بھاری صنعتوں میں صف اول میں شامل کی جانے والی سرپور پیپر ملزم تقریباً گیارہ ماہ سے بند پڑی ہے۔ فیکٹری کے انتظامیہ نے ’’شٹ وان‘‘ کا بہانہ کرکے بند کرچکی ہے۔ اس ضمن میں کئی ورکرس فاقہ کشی کا شکار ہیں، کئی ورکرس نے خودکشی کرلی اور کئی مزدوروں کے قلب پر شدید حملہ کے باعث انتقال ہو گیا، لیکن فیکٹری کے انتظامیہ پر ان واقعات کا کچھ اثر نہیں ہوا۔ اگر خدا نخواستہ یہ فیکٹری ہمیشہ کے لئے بند ہو گئی تو کاغذ نگر میں رہنے کی بجائے نقل مقام کرنے پر لوگ مجبور ہو جائیں گے۔ سیاسی رہنماؤں نے بھی فیکٹری کے مزدوروں کو مایوس کر رکھا ہے، حالانکہ نائنی نرسمہا ریڈی ہوم منسٹر ہیں اور مذکورہ فیکٹری کے ورکرس یونین کے پریسیڈنٹ ہیں، تاہم وہ بھی فیکٹری کے تعلق سے عدم دلچسپی دکھا رہے ہیں۔ اسی لئے کاغذ نگر کی تمام سیاسی پارٹیوں (کانگریس، ٹی آر ایس، ٹی ڈی پی اور بی جے پی) کے قائدین نے ایک خصوصی اجلاس طلب کرکے فیکٹری بچاؤ کمیٹی تشکیل دی ہے، جس میں راوی سرینواس ڈسٹرکٹ وائس پریسیڈنٹ تلگودیشم کو کمیٹی کا متفقہ طورپر چیرمین منتخب کیا گیا اور کلول بھٹا چاریہ ریاستی وائس پریسیڈنٹ بھارتیہ جنتا پارٹی کو کوآرڈینیٹر منتخب کیا گیا، جب کہ ان دونوں افراد کو فیکٹری کے انتظامیہ سے بات چیت کرنے کی ذمہ داری سونپی گئی ہے، تاکہ فیکٹری کے ورکرس کو یہ یقین ہو جائے کہ یہ فیکٹری چلے گی یا بند ہو جائے گی؟۔ اس دوران راوی سرینواس اور کلول بھٹا چاریہ نے تیقن دیا کہ وہ فیکٹری انتظامیہ سے بات چیت کرکے کسی نتیجہ پر پہنچیں گے۔ اس موقع پر آئی این ٹی یو سی کے ممبرس مرلی، پرکاش، نانیا، بھوپال راؤ، اے آئی ٹی یو سی کے اراکین اودیلو، ملیا اور سرینواس، بھارتیہ مزدور سنگھ کے اراکین وینکٹیشورلو اور راجنا، ٹی این ٹی یو سی کے اراکین وینو گوپال، سارنگا پانی، مونڈیا، آئی ایف ٹی یو کے اراکین وینکٹ نارائنا اور شنکر کے علاوہ کنٹراکٹ ورکرس یونین کے اراکین وینکٹیش، سنتوش، تروپتی، شیخ نواب، شنکر، ولی خان، اندوری وینکٹیشم، وجے سنگھ، جلکرا پوچم، کمل کشور بھنگ، سید فیصل، مرلیدھر، گھن پور پرکاش اور جاوید بھی موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT