Monday , January 22 2018
Home / ہندوستان / کالا دھن بل کو آج لوک سبھا میں پیش کیا جائے گا

کالا دھن بل کو آج لوک سبھا میں پیش کیا جائے گا

نئی دہلی۔ 19 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) کالے دھن کا پتہ چلانے کیلئے تیار کردہ بل کو کل لوک سبھا میں پیش کئے جانے کی توقع ہے۔ بل میں ان لوگوں کے خلاف سخت خواتین شامل کئے گئے ہیں جو اپنی غیرقانونی و ناجائز دولت کو بیرون ملک کے بینکوں میں پوشیدہ رکھے ہیں۔ ان خاطیوں کو 10 سال کی قید بامشقت دی جائے گی۔ بیرونی آمدنی اور اثاثہ جات کو آشکار کرنے (نیو ٹ

نئی دہلی۔ 19 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) کالے دھن کا پتہ چلانے کیلئے تیار کردہ بل کو کل لوک سبھا میں پیش کئے جانے کی توقع ہے۔ بل میں ان لوگوں کے خلاف سخت خواتین شامل کئے گئے ہیں جو اپنی غیرقانونی و ناجائز دولت کو بیرون ملک کے بینکوں میں پوشیدہ رکھے ہیں۔ ان خاطیوں کو 10 سال کی قید بامشقت دی جائے گی۔ بیرونی آمدنی اور اثاثہ جات کو آشکار کرنے (نیو ٹیکس بل کے اطلاق) بل 2015 میں بیرونی بینکوں میں اکاؤنٹس رکھنے والوں کیلئے ایک گنجائش یہ رکھی گئی ہے کہ وہ اپنی دولت کا ازخود انکشاف کریں اور ٹیکس ادا کریں اور جرمانہ ادا کرتے ہوئے سخت ترین کارروائیوں سے بچ جائیں۔ وزارت فینانس کے ذرائع نے کہا کہ یہ بل جس کو اس ہفتہ کے اوائل میں مرکزی کابینہ نے منظوری دے دی ہے، کل پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے گا۔ پارلیمنٹ کے جاریہ بجٹ سیشن کے پہلے مرحلے کا آخری دن ہوگا۔ بل کی پیشکشی کے بعد اس بل کی منظوری سے قبل پارلیمانی کمیٹی سے رجوع کیا جاسکتا ہے۔

بل میں یہ تجاویز بھی رکھی گئی ہیں کہ بیرونی بینکوں میں کھاتے رکھنے والے لیڈران اور افراد کو اپنی آمدنی اور ٹیکس چوری سے متعلق سچائی کو ظاہر کرنا ہوگا۔ ایسا نہ کرنے کی صورت میں خاطیوں کے خلاف غیرقانونی رقومات کی منتقلی کے تحت سخت ترین سزا دی جائے گی۔ اس بل میں خاطی دولت مندوں کو ثبوت ملنے پر 10 سال کی قید بامشقت کی سزا ہوگی۔ یہ جرم ناقابل معافی ہوگا اور خاطیوں کو اپنے تنازعہ کی یکسوئی کیلئے تصفیہ کمیٹی سے رجوع ہونے کی بھی اجازت نہیں دی جائیگی۔ ان افراد کیلئے اپنے ٹیکس چوری کا حساب اور بیرونی اثاثہ جات کا انکشاف کرنے کی صرف ایک ہی مہلت دی جائے گی اور اس کے لئے مختصر وقت دیا جائے گا جس کے بعد قواعد کے مطابق اقدام کرسکتے ہیں۔ بعد مرور مدت انہیں خاطی متصور کرکے کارروائی کی جائیگی۔ وزیراعظم نریندر مودی نے لوک سبھا انتخابات کے دوران وعدہ کیا تھا کہ وہ کالا دھن کو ہندوستان واپس لانے کی ہر ممکنہ کوشش کریں گے ۔

TOPPOPULARRECENT