کالا ہرن شکار کیس سلمان خان کو 5 سال کی جیل

سیف علی خان، تبو، سونالی اور نیلم بری

جودھپور 5 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) جودھپور کی عدالت نے آج بالی ووڈ اسٹار سلمان خان کو 5 سال جیل کی سزا سنائی اور انھیں اکٹوبر 1998 ء میں دو کالے ہرن کا شکار کرکے ہلاک کرنے کی پاداش میں جودھپور سنٹرل جیل بھیج دیا، وکیل استغاثہ نے یہ بات بتائی۔ عدالت نے اِن کے ساتھیوں سیف علی خان، تبو، نیلم اور سونالی بیندرے کے علاوہ ایک مقامی شہری دوشانت سنگھ کو شبہ کا فائدہ دیتے ہوئے الزامات منسوبہ سے بری کردیا۔ 52 سالہ سلمان کو عدالت کے احاطہ سے پولیس کی گاڑی میں جودھپور سنٹرل جیل لیجایا گیا۔ جیل کی سزا تین سال سے زائد ہے۔ سلمان ضمانت کیلئے اعلیٰ عدالت سے اپیل کریں گے۔ وہ چوتھی مرتبہ جودھپور سنٹرل جیل میں قید ہورہے ہیں۔ اِس سے پہلے انھوں نے 1998 ء ، 2006 ء ، 2007 ء میں جیل کے اندر جملہ 18 دن گزارے تھے۔ یہ تمام سزائیں اسی شکار کیس میں ہوئی تھیں۔ تحت کی عدالت میں اِس کیس کی قطعی بحث مکمل ہونے پر چیف جوڈیشیل مجسٹریٹ دیوکمار کھتری نے اپنا فیصلہ محفوظ کردیا تھا۔ آج عدالت نے سلمان خان کی سزا کا اعلان کیا اور اِن پر 10 ہزار روپئے کا جرمانہ بھی عائد کیا۔ وکیل استغاثہ مہیپال بھشنوئی نے کہاکہ عدالت نے انھیں 5 سال کی سزائے قید سنائی ہے اور انھیں وائیلڈ لائف پروٹیکشن ایکٹ کی دفعہ 9/51 کے تحت مجرم پایا ہے۔

 

سلمان خان جودھپور سنٹرل جیل میں قیدی نمبر 106
اداکار کو آسارام کے بیرک کے بازو جگہ ملی ، شدید گرمی میں صرف پنکھے کی ہوا میسر، جیل کی نارمل غذا نہیں کھائی

جودھپور ، 5 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) سلمان خان بھلے ہی لاکھوں کروڑوںکے دلوں کی دھڑکن ہوں، مگر جودھپور سنٹرل جیل میں وہ محض قیدی نمبر 106 ہے جسے سادہ دال روٹی دی گئی جو اُس نے نہیں کھائی۔ سلمان کو جسے 20 سال قبل دو سیاہ ہرنوں کو ہلاک کرنے کے جرم میں آج پانچ سال کی سزائے قید سنائی گئی، خودساختہ اوتار آسارام کے بیرک سے متصل وارڈ نمبر 2 میں رکھا گیا ہے جہاں کسی اور قیدی کو نہیں رکھا جائے گا۔ جیل سپرنٹنڈنٹ وکرم سنگھ نے مشہور و معروف قیدی کے بارے میں میڈیا کو بریفنگ میں کہا کہ سلمان سے عام قیدی جیسا سلوک ہوگا اور اُن سے کوئی خصوصی رویہ نہیں برتا جائے گا۔ وکرم سنگھ نے کہا کہ سلمان کو بیرک میں سادہ چارپائی، کمبل اور ایک کولر مہیا کرائے جائیں گے۔ اُن کو جیل کی نارمل غذا دال چپاتی دی گئی اور صبح کے کھانے میں سادہ کھچڑی شامل رہے گی۔ تاہم، ذرائع نے کہا کہ بالی ووڈ اسٹار نے جیل کی غذا نہیں کھائی۔ وکرم سنگھ نے بتایا کہ ایکٹر کو جیل پہنچنے پر بلڈ پریشر کا مسئلہ معلوم ہوا اور پریزن ڈسپنسری کے ڈاکٹر نے اُن کا معائنہ کیا۔ بعد میں اُن کا بی پی نارمل قرار دیا گیا۔ بیس سال قبل سلمان راجستھان میں فلم شوٹنگ کے سلسلے میں گئے تھے۔ وہاں انھوں نے دو کالے ہرنوں کو فائر کرکے ہلاک کیا تھا۔ یہ واقعہ یکم اکٹوبر 1998 ء کی رات کو پیش آیا تھا جب اُن کے ساتھ دیگر ساتھی اداکار بھی تھے۔ وہ یہاں فلم ’’ہم ساتھ ساتھ ہیں‘‘ کی شوٹنگ کیلئے آئے ہوئے تھے۔ یہ تمام اداکار اُس رات جپسی میں سوار تھے اور سلمان گاڑی چلارہے تھے۔ وکیل استغاثہ نے کہاکہ سلمان نے جنگل میں کالے ہرنوں کو دیکھا اور اِن میں سے دو کو ہلاک کردیا۔ تمام ملزمین جن میں سے بعض اپنے ارکان خاندان کے ساتھ آئے ، اُس وقت کمرۂ عدالت میں موجود تھے جب جج نے اس کیس کا فیصلہ سنایا۔ سلمان خان کو راجستھان کی جھلسا دینے والی گرمی میں صرف ایک پنکھے کے ساتھ بیرک میں رکھا جائے گا۔ ان کے ساتھ کوئی وی آئی پی سلوک نہیں کیا جائے گا۔ ان کا بیرک خود ساختہ گاڈ مین آسارام کے بیرک کے بازو ہے۔ آسارام کو عصمت ریزی کیس میں سزا کا سامنا ہے۔

TOPPOPULARRECENT