Thursday , December 14 2017
Home / شہر کی خبریں / کالیشورم پراجکٹ پر مہاراشٹرا کانگریس حکومت کا منفی رویہ

کالیشورم پراجکٹ پر مہاراشٹرا کانگریس حکومت کا منفی رویہ

تلنگانہ کانگریس کا مثبت ردعمل ، وزیر آبپاشی ٹی ہریش راؤ
حیدرآباد 13 مئی (سیاست نیوز) وزیر آبپاشی ہریش راؤ نے کانگریس پارٹی پر الزام عائد کیاکہ وہ آبپاشی پراجکٹس کے مسئلہ پر ہر ریاست میں علیحدہ موقف اختیار کررہی ہے۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ہریش راؤ نے کہاکہ مہاراشٹرا کی کانگریس پارٹی کالیشورم پراجکٹ کی تعمیر کو روکنے کی کوشش کررہی ہے اور اُس نے پراجکٹ کی مخالفت کا اعلان کیا جبکہ تلنگانہ کے کانگریس قائدین پراجکٹ کی تائید کا دعویٰ کررہے ہیں۔ ہریش راؤ نے کہاکہ ایک ہی پارٹی دو ریاستوں میں کس طرح علیحدہ موقف اختیار کرسکتی ہے۔ اگر کانگریس قائدین کو تلنگانہ عوام کے مفادات عزیز ہیں تو اُنھیں چاہئے کہ وہ مہاراشٹرا پارٹی یونٹ کو کالیشورم پراجکٹ کی مخالفت سے باز رکھے۔ اُنھوں نے سوال کیاکہ کانگریس پارٹی کو آخر کتنے منہ ہیں اور وہ کب کس سے بات کرتی ہے عوام کی سمجھ سے باہر ہے۔ ہر لمحہ موقف تبدیل کرنا کانگریس کی عادت بن چکی ہے۔ ہریش راؤ نے واضح کیاکہ تلنگانہ میں آبپاشی پراجکٹس کی تعمیر کو کوئی بھی طاقت روک نہیں پائے گی۔ اُنھوں نے کہاکہ کانگریس بظاہر پراجکٹس کی تعمیر کی تائید کررہی ہے جبکہ دوسری طرف دیگر ریاستوں کے پارٹی یونٹس کو مخالفت کے لئے اُکسایا جارہا ہے۔ اُنھوں نے تلگودیشم اور کانگریس پر تنقید کی اور کہاکہ تلنگانہ کے مخالفین آج پراجکٹس کی تعمیر کی مخالفت کررہے ہیں۔ چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ، تلنگانہ سے خشک سالی کو ہمیشہ کے لئے ختم کرنے کا تہیہ کرچکے ہیں اور پراجکٹس کی تعمیر اِسی عزم کا حصہ ہے۔ ہریش راؤ نے کہاکہ تلنگانہ میں ایک کروڑ ایکر اراضی کو سیراب کرنا حکومت کا مقصد ہے۔ مشن کاکتیہ کے تحت تالابوں کے تحفظ اور جھیلوں کے احیاء کا حوالہ دیتے ہوئے ہریش راؤ نے کہاکہ اِس پراجکٹ کی ملک بھر میں ستائش کی جارہی ہے اور کئی ریاستوں نے پراجکٹس کی تفصیلات حاصل کرتے ہوئے اِسے اختیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT