Tuesday , June 19 2018
Home / دنیا / کالے دھن پرجی 20 سمٹ قابل لحاظ پیشرفت میں ناکام

کالے دھن پرجی 20 سمٹ قابل لحاظ پیشرفت میں ناکام

واشنگٹن ، 18 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) آسٹریلیا میں منعقدہجی 20 سمٹ اقتصادی شفافیت اور غیرقانونی رقمی لین دین کے بارے میں کوئی خاص پیشرفت کرنے میں ناکام رہی ، کالے دھن کے بارے میں اپنے اختراعی اقدامات کے لئے مشہور نامور بین الاقوامی ادارے نے یہ دعویٰ کیا ہے ۔ بیکر گلوبل فینانشیل انٹی گریٹی کے صدر ریمنڈ نے کہا کہ جی ٹوئنٹی نے اس عالمی برائ

واشنگٹن ، 18 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) آسٹریلیا میں منعقدہجی 20 سمٹ اقتصادی شفافیت اور غیرقانونی رقمی لین دین کے بارے میں کوئی خاص پیشرفت کرنے میں ناکام رہی ، کالے دھن کے بارے میں اپنے اختراعی اقدامات کے لئے مشہور نامور بین الاقوامی ادارے نے یہ دعویٰ کیا ہے ۔ بیکر گلوبل فینانشیل انٹی گریٹی کے صدر ریمنڈ نے کہا کہ جی ٹوئنٹی نے اس عالمی برائی سے نمٹنے کا سنہری موقع گنوادیا جبکہ بے نام کمپنیوں اور مختلف ادارہ جات کی جانب سے غیرقانونی رقمی لین دین پر روک لگانے کے مناسب و کارگر اقدامات کئے جاسکتے تھے ۔ اس ضمن میں ملک در ملک معلومات کا تبادلہ ممکن بنایا جاسکتا ہے ۔ مالی جرائم کے بارے میں طویل مدت سے اتھاریٹی سمجھے جانے والے اس ادارے نے حال ہی میں جی ٹوئنٹی قائدین کو اس موضوع پر چوٹی اجلاس سے قبل ایک کھلا خط تحریر کیا تھا ۔

ادارہ نے کہا کہ غیرقانونی رقمی لین دین جو بے نامی کمپنیوں اور ٹیکس بچانے کی پناہ گاہوں کی جانب سے کئے جاتے ہیں ، اُن کے سبب معاشی ترقی اور ٹیکس آمدنی کو کاری ضرب لگتی ہے ۔ ایک اندازہ کے مطابق سالانہ ایک ٹریلین امریکی ڈالر کا ترقی پذیر اور ابھرتے ممالک کو نقصان برداشت کرنا پڑتا ہے جو بصورت دیگر جرائم اور بدعنوانی کے انسداد کے لئے استعمال ہوسکتا تھا ۔ ادارہ نے اپنے بیان میں کہا کہ جی ٹوئنٹی سمٹ میں نمایاں طورپر اس معاملے میں کوتاہی دکھائی کے ایسے سنگین مسئلے پر متفقہ طورپر کوئی بڑا اقدام نہیں کیا جاسکا۔ اس ادارے نے بہت طویل عرصہ سے مالیاتی شفافیت یا اقتصادی شفافیت کے بنیادی اقدامات کو روبعمل لانے کی وکالت کی ہے تاکہ غیرقانونی رقمی لین دین کو روکنے کے مشترک طریقہ اختراع کئے جاسکیں۔ یہ تمام مسائل دنیا بھر کے ممالک سے تعلق رکھتے ہیں لیکن جی ٹوئنٹی سمٹ کے بیانات میں اس بارے میں کوئی ٹھوس بات نہیں کہی گئی ۔ اس ادارے کے مطابق جی ٹوئنٹی کا ٹیکس کی معلومات کے خودکار تبادلے کے ضمن میں عہد کا خیرمقدم ضرور کیا جاسکتا ہے لیکن یہ ابھی نامکمل ہے ۔

TOPPOPULARRECENT