کالے دھن پر این ڈی اے اپنے موقف سے منحرف

نئی دہلی 18 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) این ڈی اے حکومت نے سپریم کورٹ سے کہا کہ وہ بیرونی بینکوں میں رکھے گئے کالے دھن کے سلسلہ میں متعلقہ افراد کے ناموں کا انکشاف نہیں کرسکتی۔ اس طرح این ڈی اے حکومت اپنے موقف سے منحرف ہوئی ہے ۔ کانگریس نے حکومت کے اس اقدام کو سیاسی بد دیانتی قرار دیا ہے ۔ حکومت نے عدالت سے کہا کہ دہرے ٹیکس سے گریز معاہدہ کے

نئی دہلی 18 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) این ڈی اے حکومت نے سپریم کورٹ سے کہا کہ وہ بیرونی بینکوں میں رکھے گئے کالے دھن کے سلسلہ میں متعلقہ افراد کے ناموں کا انکشاف نہیں کرسکتی۔ اس طرح این ڈی اے حکومت اپنے موقف سے منحرف ہوئی ہے ۔ کانگریس نے حکومت کے اس اقدام کو سیاسی بد دیانتی قرار دیا ہے ۔ حکومت نے عدالت سے کہا کہ دہرے ٹیکس سے گریز معاہدہ کے تحت رازداری کو برقراررکھا جائے گا ۔ جرمنی کے حکام کی جانب سے ظاہر کردہ ناموں کو برسر عام نہیں لایا جاسکتا ۔ ان ناموں کو صرف ٹیکس مقاصد کیلئے استعمال کیا جاتا ہے ۔ اور ان ناموں کو صرف ٹیکس مقاصد کیلئے ہی استعمال کیاجانا چاہئے ۔ اٹارنی جنرل مکل روہنگی نے 3 رکنی بنچ کو بتایا کہ حکومت چاہتی ہے کہ مئی 2014 ء میں جاری کردہ احکام میں ترمیم کی جائے ۔ اپوزیشن پارٹیوں نے مودی حکومت کے اس انحرافی موقف پر تنقید کی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT