Wednesday , December 13 2017
Home / شہر کی خبریں / کانچہ ایلیا پر مختلف طبقات میں نفرت کا ماحول پیدا کرنے کا الزام

کانچہ ایلیا پر مختلف طبقات میں نفرت کا ماحول پیدا کرنے کا الزام

آریا ویشیا سماج کے خلاف تنقیدیں مسترد ، ٹی آر ایس قائدین کا سخت ردعمل
حیدرآباد۔18 ستمبر (سیاست نیوز) ٹی آر ایس قائدین نے سماجی جہدکار پروفیسر کانچہ ایلیا کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ سماج میں مختلف طبقات کو منظم کرنے کے بجائے وہ نفرت کا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے رکن پارلیمنٹ بی سمن اور ارکان مقننہ سرینواس گوڑ، ڈی گنیش اور جی بالراجو نے آریا ویشیا سماج کے خلاف کانچہ ایلیا کی تنقیدوں کو یہ کہتے ہوئے مسترد کردیا کہ ایک مخصوص طبقے کو نشانہ بنانے کا آخر حق کس نے دیا ہے۔ ان قائدین نے آریاویشیا سماج کے خلاف تحریر کی گئی کتاب سے دستبرداری اور کھلے عام معذرت خواہی کا مطالبہ کیا۔ ان قائدین نے کہا کہ ٹی آر ایس کو آریاویشیا سماج پر عاید کیے گئے الزامات پر افسوس ہے اور وہ مذکورہ طبقے کے ساتھ کھڑی ہے۔ سمن نے سوال کیا کہ کانچہ ایلیا کو آخر اس طرح کی تصنیف کی ضرورت کیوں محسوس ہوئی۔ انہوں نے کہاکہ سماج کے تمام طبقات میں اتحاد کے ذریعہ ہی ریاست کو ترقی کی راہ پر گامزن کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانچہ ایلیا جان بوجھ کر سماج میں نفرت پیدا کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سماجی جہدکاروں اور پسماندہ طبقات کے لیے جدوجہد کا دعوی کرنے والوں کے لیے یہ مناسب نہیں ہے کہ وہ کسی مخصوص طبقے کو نشانہ بنائے۔ رکن اسمبلی سرینواس گوڑ نے کانچہ ایلیا کو سماجی دہشت گرد قرار دیا اور کہا کہ ان کی اس غلطی کو سماج کبھی معاف نہیں کرے گا۔ سرینواس گوڑ نے کہا کہ ایس سی، ایس ٹی اور بی سی طلباء اور سماجی تنظیموں نے بھی کانچہ ایلیا کی تصنیف کی مخالفت کی ہے۔ آریا ویشیا تنظیم پرامن تنظیم ہے اور اسے نشانہ بنانا افسوسناک ہے۔ رکن اسمبلی ڈی گنیش نے کہا کہ تلنگانہ سماج کو توڑنے کی کوششوں کو عوام ناکام کردیں گے۔ اسی دوران بھونگیر کے رکن پارلیمنٹ ڈاکٹر بی نرسیا گوڑ نے بھی کانچہ ایلیا کی تصنیف کی مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ تمام طبقات کی یکساں ترقی کے لیے باہم اتحاد اور تال میل ضروری ہے اور سماج کو توڑنے والی طاقتیں کبھی بھی ملک کی ہمدرد نہیں ہوسکتی۔

TOPPOPULARRECENT