Saturday , May 26 2018
Home / شہر کی خبریں / کانگریس ، تلنگانہ میں تین زبانوں میں اخبارات کا آغاز کرے گی

کانگریس ، تلنگانہ میں تین زبانوں میں اخبارات کا آغاز کرے گی

ذاتی ماس میڈیا کی ضرورت کا پارٹی کو شدید احساس
حیدرآباد ۔ 27 ۔ نومبر : ( ایجنسیز ) : آئندہ منعقد ہونے والے عام انتخابات کے پیش نظر ، ماس میڈیا کے ذریعہ عوام تک پہنچنے کے مقصد سے سیاسی جماعتوں کی جانب سے ان کے اپنے میڈیا ہاوزس کا آغاز کیا جارہا ہے اور تلنگانہ کانگریس جلد ہی اس میں شامل ہوگی ۔ پارٹی ذرائع کے مطابق تلنگانہ کانگریس انگلش ، ہندی اور تلگو میں روزنامہ اخبارات کا آغاز کرے گی ۔ جس کا آغاز آئندہ سال ہوسکتا ہے ۔ اے آئی سی سی کی جانب سے آئندہ عام انتخابات کے وقت تک تلنگانہ میں کانگریس کے روزناموں کے آغاز کی کوشش کی جارہی ہے ۔ کانگریس کی جانب سے بنگلورو میں نیشنل ہیرالڈ کے انگلش ، ہندی اور کنڑا ایڈیشنس کا آغاز کیا جاچکا ہے ۔ کرناٹک کانگریس کو تین زبانوں میں نیشنل ہیرالڈ کے تلنگانہ ایڈیشن کو منظر عام پر لانے کی ذمہ داری تفویض کی جائے گی ۔ نیشنل ہیرالڈ کا حال میں چندی گڑھ میں آغاز کیا گیا ہے ۔ کانگریس قائدین کا کہنا ہے کہ ان دنوں میڈیا ہاوز کا مالک ہونا سیاسی جماعتوں کے لیے ضروری ہوگیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ چونکہ دیگر اہم سیاسی جماعتوں کے ذاتی میڈیا ہاوزس ہیں اس لیے کانگریس کے پاس بھی یہ ہونا چاہئے ۔ تلنگانہ میں حکمران جماعت تلنگانہ راشٹرا سمیتی ( ٹی آر ایس ) کے پاس تلگو روزنامہ ’ نمستے تلنگانہ ‘ اور انگریزی روزنامہ ’ تلنگانہ ٹو ڈے ‘ ہیں اور یہ پارٹی نمستے تلنگانہ کے اردو ایڈیشن کو شروع کرنے پر بھی غور کررہی ہے ۔ وائی ایس آر کانگریس پارٹی کی جانب سے تلگو اخبار ساکشی نکالا جارہا ہے اور اے آئی ایم آئی ایم کی جانب سے اردو روزنامہ اعتماد کی اشاعت عمل میں لائی جارہی ہے ۔ ریاست تلنگانہ کے قیام کے بعد بائیں بازو کی جماعتوں کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا ( سی پی آئی ) اور کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا مارکسسٹ ( سی پی آئی ایم ) نے ان کے روزنامہ جات بالترتیب منا تلنگانہ اور نوا تلنگانہ کا آغاز کیا ۔ حکمران جماعت ایک ٹی وی نیوز چیانل ، ٹی نیوز کی مالک ہے اور کانگریس کے ایم ایل سی کے راج گوپال ریڈی نے ٹی وی نیوز چیانل ، راج نیوز کا آغاز کیا ہے ۔ تلنگانہ سی پی ایم ایک نیوز چیانل ، 10TV چلا رہی ہے اور سی پی آئی 99TV چیانل چلا رہی ہے ۔ اس پس منظر میں کانگریس کو خود اپنا میڈیا ہاوز رکھنے کا شدید احساس ہورہا ہے تاکہ حکومت پر شکنجہ کسے اور اس کے پیام کو عوام اور کیڈر تک پہنچایا جاسکے ۔ کانگریس کا خیال ہے کہ کئی نیوز چیانلس اور اخبارات کی جانب سے اس کی پارٹی سرگرمیوں کو زیادہ اہمیت نہیں دی جارہی ہے ۔ تلنگانہ اسمبلی میں قائد اپوزیشن کے جانا ریڈی نے حال میں میڈیا سے غیر رسمی بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ نیوز چیانلس اور روزنامہ اخبارات تلنگانہ اسمبلی کی اصل اپوزیشن جماعت کو نظر انداز کررہے ہیں ۔ ان کی تقاریر کو اخبارات اور نیوز چیانلس پر پیش نہیں کیا جارہا ہے ۔ بہر حال کانگریس اب میڈیا پر توجہ دے رہی ہے اور سوشیل میڈیا کا بھر پور استعمال کررہی ہے ۔ تاہم یہ جماعت ماس میڈیا کی مدد بھی حاصل کرنا چاہتی ہے جو اس کے پیام کو عوام تک بہتر انداز میں پہنچا سکتا ہے ۔ اور اس طرح کانگریس پارٹی نے روزنامہ جات کی اشاعت شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT