Wednesday , June 20 2018
Home / شہر کی خبریں / کانگریس ارکان کی اسمبلی میں زبردست ہنگامہ آرائی‘ اجلاس تین مرتبہ ملتوی

کانگریس ارکان کی اسمبلی میں زبردست ہنگامہ آرائی‘ اجلاس تین مرتبہ ملتوی

ٹی آر ایس حکومت پر اپوزیشن ارکان کے انحراف کی حوصلہ افزائی کا الزام ‘ تحریک التواء پر اصرار

ٹی آر ایس حکومت پر اپوزیشن ارکان کے انحراف کی حوصلہ افزائی کا الزام ‘ تحریک التواء پر اصرار
حیدرآباد۔17 نومبر ( پی ٹی آئی) تلنگانہ قانون اسمبلی کا اجلاس اپوزیشن جماعت کانگریس کے ارکان کے مسلسل احتجاج کے سبب کوئی بھی مقررہ کارروائی کے بغیر کل صبح تک کیلئے ملتوی کردیا گیا ۔ ارکان کے انحراف کا مسئلہ آج ایوان میں گونج اٹھا اور اپوزیشن کانگریس کے ارکان نے مسلسل احتجاج کرتے ہوئے وقفہ سوالات کے دوران کارروائی کو روک دیا ۔ ایوان کو پہلے 10منٹ اور بعد میں 30منٹ کیلئے ملتوی کیا گیا لیکن یہ دونوں التواء ایوان میں نظم و ضبط بحال نہیں کرسکے کیونکہ کانگریس کے ارکان نے تحریک التواء پر بحث کیلئے اصرار کررہے تھے ۔ کانگریس کے ارکان جو اپنے بازو پر سیاہ بیاچ لگائے ہوئے تھے چیف منسٹر کالواکنٹلہ چندر شیکھر راؤ پر الزام عائد کیا کہ وہ دیگر جماعتوں کے ارکان مقننہ کو انحراف کیلئے اکساتے ہوئے اپنی پارٹی میں شمولیت کی حوصلہ افزائی کررہے ہیں ۔ ارکان آج 10بجے دن جیسے ہی اجلاس شروع ہوا اپنی نشستوں سے اُٹھ کھڑے ہوگئے اور انحراف کے مسئلہ سے متعلق تحریک مراعات پر بحث کی فی الفور اجازت دینے کا مطالبہ کیا ۔ کانگریس اور تلگودیشم کے متعدد ارکان اسمبلی و قانون ساز کونسل کے حالیہ چند دنوں میں انحراف اور حکمراں ٹی آر ایس میں شمولیت کے پس منظر میں اصل اپوزیشن جماعت کانگریس نے یہ تحریک التواء پیش کیا تھا ۔ حتی کہ گذشتہ روز اتوار کو چیوڑلہ کے رکن اسمبلی یادیا نے کانگریس سے انحراف کرتے ہوئے ٹی آر ایس میں شمولیت احتیار کیا تھا ۔ اس واقعہ نے اپوزیشن جماعت کو مزید چراغ پا کردیا ۔ کانگریس کے ارکان اس بات پر بضد تھے کہ انحراف کے مسئلہ پر ایوان میں فی الفور بحث کی جائے اور اسپیکر کو چاہیئے کہ وہ منحرف ارکان کو رکنیت سے نااہل قرار دیں ۔ وزیر اُمور مقننہ ٹی ہریش راؤ اس درمیان مداخلت کرتے ہوئے احتجاجی ارکان کو یاد دلایا کہ بزنس اڈوائرزی کمیٹی کی طرف سے طئے شدہ ایجنڈہ کے مطابق سب سے پہلے وقفہ سوالات مقرر ہوگا جس کے اختتام کے بعد ہی تحریک مراعات پر بحث کے بارے میں غور کیا جاسکتا ہے ۔ مسٹر ہریش راؤ نے کہا کہ وہ کانگریس ہی ہے جس نے سب سے پہلے انحراف کی حوصلہ افزائی کی تھی ۔ وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی کے ٹی راما راؤ نے کانگریس کے برہم ارکان کا مذاق اڑاتے ہوئے کہا کہ وہ ان ( اپوزیشن ارکان) کی جماعت ( کانگریس) ہی ہے جس نے انحراف کی حوصلہ افزائی ۔ مسٹر کے ٹی راما راؤ نے مزید کہا کہ ’’ ہر کوئی اس حقیقیت سے باخبر ہے کہ کانگریس نے 2004ء اور 2009ء کے درمیان اپنے دور اقتدار میں ٹی آر ایس کے 26 کے منجملہ 10 ارکان کو انحراف کیلئے اکسیا تھا اور منحرفین کو اپنی جماعت میں شامل کیا گیا تھا لیکن اب آپ ( کانگریس) اس مسئلہ پر درس و نصیحت کی کوشش کررہے ہیں ۔ ان کے اس ریمارک پر احتجاج کرتے ہوئے کانگریس کے ارکان نعرہ لگاتے ہوئے ایوان کے وسط میں پہنچ گئے اور اسپیکر مدھو سدن چاری نے 10منٹ کیلئے ایوان کی کارروائی کو ملتوی کردیا جیسے ہی ایوان کی کارروائی دوسری مرتبہ شروع ہوئی اس مسئلہ پر ہنگامہ آرائی جاری رہی ۔ اسپیکر نے ایوان میں نظم و ضبط بحال کرنے متعدد مرتبہ اپیل کی جو بے سود ثابت ہونے پر 30منٹ کیلئے اجلاس ملتوی کردیا گیا ۔ تیسری مرتبہپ اجلاس کو کل 10بجے دن تک ملتوی کردیا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT