Friday , November 24 2017
Home / سیاسیات / کانگریس اور بائیں بازو کے ارکان پارلیمنٹ این ڈی اے کے نشانہ پر

کانگریس اور بائیں بازو کے ارکان پارلیمنٹ این ڈی اے کے نشانہ پر

ملک گیر سطح پر بائیں بازو اور کانگریس ارکان پارلیمنٹ کے حلقوں میں عام جلسوں اور جلوسوں کا پروگرام
نئی دہلی 13 اگست (سیاست ڈاٹ کام )بی جے پی اور کانگریس کے درمیان تلخ صف آرائی جس کی وجہ سے پارلیمنٹ کا پورا مانسون اجلاس ضائع ہوگیا۔ این ڈی اے نے فیصلہ کیا ہے کہ ملک گیر سطح پر عام جلسے اور جلوس منعقد کر کے کانگریس اور بائیں بازو کے ارکان پارلیمنٹ کے انتخابی حلقوں میں پارلیمنٹ کی کارروائی میں دخل اندازی پر اُن کو تنقید کا نشانہ بنایا جائے گا۔ اجلاس کے غیر معینہ مدت تک ملتوی ہونے کے فوری بعد دونوں فریقین نے للت مودی تنازعہ اور ویاپم اسکام کے سلسلہ میں ایک دوسرے پر الزام تراشی کا آغاز کردیا اور پارلیمنٹ کے  احاطہ میں احتجاجی مظاہرے منعقد کئے ۔ وزیر اعظم نریندر مودی ‘سینئر وزراء اور این ڈی اے کے ارکان پارلیمنٹ بشمول ایل کے اڈوانی ‘ارون جیٹلی ‘سشما سوراج ‘راجناتھ سنگھ اور رام ولاس پاسوان نے وجئے چوک سے گاندھی جی کے مجسمہ تک جوپارلیمنٹ کے احاطہ میں ہے نعرہ بازی کرتے ہوئے کانگریس کے خلاف پلے کارڈ لہراتے ہوئے جلوس نکالا۔ این ڈی اے ارکان پارلیمنٹ کے ایک اجلاس میں مودی نے انہیں ہدایت دی کہ پورے ملک میں پھیل جائیں اور کانگریس کو بے نقاب کریں۔ اس کا تقابل ایمرجنسی کے دور سے کیا جائے جب کانگریس چاہتی تھی کہ اقتدار صرف ایک خاندان تک محدود رہے۔ یہ مہم ایک ماہ طویل ہوگی جس میںکانگریس اور بائیں بازو کے ارکان پارلیمنٹ کو نشانہ بنایا جائے گا ۔

TOPPOPULARRECENT