Saturday , November 25 2017
Home / سیاسیات / کانگریس اور بی جے پی کی نظر میں قبائیلی صرف ’’ووٹ بینک‘‘

کانگریس اور بی جے پی کی نظر میں قبائیلی صرف ’’ووٹ بینک‘‘

دلتوں کو ترقی دینے کے بجائے بی جے پی تحفظات ختم کرنے کوشاں : شرد یادو
رتلم (ایم پی)۔ 18 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) رتلم لوک سبھا ضمنی انتخابات کے لئے اپنی مہم کو تیز کرتے ہوئے جنتا دل (یو) نے آج کانگریس اور بی جے پی دونوں پر تنقید کی کہ یہ پارٹیاں قبائیلیوں کا استحصال کررہی ہیں۔ ان دونوں پارٹیوں نے قبائیلیوں کو ہمیشہ ووٹ بینک ہی سمجھا ہے۔ ان کی ترقی کے لئے کچھ نہیں کیا جبکہ بی جے پی چاہتی ہے کہ قبائیلیوں کی معاشی اور سماجی ترقی کے لئے فراہم کردہ تحفظات کو ختم کردیا جائے۔ جنتا دل (یو) صدر شرد یادو نے کہا کہ دہلی اور مدھیہ پردیش میں بی جے پی حکومت نے دلتوں اور قبائیلیوں کی ترقی کے لئے فراہم کردہ تحفظات کو ختم کرنے کا منصوبہ بنایا ہے، جبکہ کانگریس نے اب تک کسی بھی میدان میں قبائیلی طبقہ کی بہبود کے لئے کام نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ ان پارٹیوں کی وجہ سے ہی ملک میں ان طبقات کی حالت بہتر نہیں ہوئی۔ ان کا کانگریس اور بی جے پی مل کر شدید استحصال کررہے ہیں۔ کانگریس اور بی جے پی انہیں صرف ووٹ بینک کے طور پر استعمال کررہی ہیں۔ انہوں نے اس حلقہ سے جنتا دل (یو) کے امیدوار کی کامیابی کے لئے عوام سے ووٹ دینے کی اپیل کی ہے۔ جنتا دل (یو) نے سی پی آئی، سی پی آئی (مارکسسٹ) کے علاوہ دیگر علاقائی پارٹیوں سے اتحاد کیا ہے۔ یہاں کانگریس اور بی جے پی کے امیدواروں کا مقابلہ کرنے کیلئے ان پارٹیوں نے اپنا مشترکہ امیدوار کھڑا کیا ہے۔ بہار کے عظیم سیکولر اتحاد کے خطوط پر یہاں ان پارٹیوں نے بھی اپنا اتحاد بنایا ہے۔ اسی طرح اب سارے ملک میں سیکولرازم کو فروغ دینے کی لہر شروع ہوچکی ہے۔

TOPPOPULARRECENT