Wednesday , December 12 2018

کانگریس اپوزیشن لیڈر کے عہدہ کی اہل نہیں

اٹارنی جنرل کی رائے ۔ اسپیکر گمراہ نہ ہوں، کانگریس کا ردعمل

اٹارنی جنرل کی رائے ۔ اسپیکر گمراہ نہ ہوں، کانگریس کا ردعمل
نئی دہلی ، 25 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس کیلئے ایک جھٹکے میں جبکہ وہ اپوزیشن لیڈر کے عہدہ کیلئے جدوجہد کررہی ہے، اٹارنی جنرل مکل روہٹگی نے اپنی رائے ظاہر کی ہے کہ یہ پارٹی اس عہدہ کیلئے اہل نہیں اور پہلی لوک سبھا کے دنوں کے بعد سے ایسی کوئی نظیر نہیں ملتی کہ کسی ایسی پارٹی کو یہ عہدہ دیاجائے جس کے پاس درکار اقل ترین ایم پیز کی عددی طاقت نہ ہو۔ ذرائع نے کہا کہ روہٹگی نے اپنی رائے سے اسپیکر لوک سبھا سمترا مہاجن کو واقف کرادیا ہے جنھوں نے اس مسئلے پر لیت و لعل کے پیش نظر اُن کی رائے طلب کی تھی۔ ملک کے سرکردہ قانونی عہدہ دار نے کہا کہ کانگریس اس عہدہ کیلئے اہل نہیں کیونکہ اس کے پاس 543 رکنی لوک سبھا میں 10 فیصد عددی طاقت (55 نشستیں) نہیں ہیں۔ کانگریس نے صرف 44 سیٹیں جیتی ہیں۔ تاہم کانگریس نے آج رات امید ظاہر کی کہ اسپیکر سمترامہاجن اس معاملے میں اٹارنی جنرل روہٹگی کی رائے سے ’’گمراہ‘‘ نہیں ہوں گی ۔ پارٹی جنرل سکریٹری شکیل احمد نے نیوز ایجنسی پی ٹی آئی کو بتایا کہ اٹارنی جنرل حکومت کی رائے کی نمائندگی کرتا ہے۔ وہ حکومت کے نقطہ نظر کو پیش کرتا ہے۔ حکومت کو اپوزیشن لیڈر کے عہدہ سے کچھ لینا دینا نہیں۔ یہ تو اسپیکر کے دائرہ کار کے تحت آتا ہے۔ ’’ہم اسپیکر کی رولنگ کے بعد مناسب ردعمل ظاہر کریں گے‘‘۔ دریں اثناء بی جے پی نے آج کہا کہ کانگریس کو شاید اپوزیشن لیڈر کے عہدہ کے بغیر ہی اکتفا کرنا پڑے گا کیونکہ اسپیکر کیلئے کانگریس کو یہ عہدہ دینا بہت مشکل رہے گا جبکہ اس معاملے میں اٹارنی جنرل اپنی رائے سے واقف کرا چکے ہیں۔ پارٹی نے کہا کہ اٹارنی جنرل حکومت کیلئے اعلیٰ ترین دستوری مشیر ہوتے ہیں۔

سونیا گاندھی سی پی پی میٹنگ کیلئے
تنہا پہنچ گئیں، انتظامی لغزش
نئی دہلی ، 25 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس پارلیمنٹری پارٹی کے سکریٹریٹ کی جانب سے سی پی پی میٹنگ کے شیڈول کے بارے میں بڑی لغزش کے نتیجے پارٹی سربراہ سونیا گاندھی پارلیمنٹ میں آج صبح منسوخ شدہ اجلاس میں واحد مدعو کی حیثیت سے پہنچ گئیں۔ سی پی پی کی میٹنگ قبل ازیں طئے کی گئی تھی لیکن بعد میں اس کو منسوخ کردیا گیا۔ تاہم سونیا گاندھی کو مطلع نہیں کیا گیا۔ وہ اس میٹنگ کیلئے پہنچ گئیں اور دیکھا کہ وہاں کوئی نہیں۔ چونکہ کوئی ارکان موجود نہ تھے، اس لئے سونیا گاندھی نے اپنی دیگر مصروفیت کی راہ لی، جو صدرجمہوریہ پرنب مکرجی سے راشٹرپتی بھون میں صبح 10 بجے ملاقات رہی۔ پارٹی ذرائع نے کہا کہ ابتداء میں آج سی پی پی میٹنگ کی بات ہوئی تھی لیکن بعد میں اسے ترک کردیا گیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT