Wednesday , September 19 2018
Home / شہر کی خبریں / کانگریس حکومت کی غلط پالیسیوں سے تلنگانہ میں برقی بحران

کانگریس حکومت کی غلط پالیسیوں سے تلنگانہ میں برقی بحران

آئندہ دو ماہ میں قابو ممکن ، وزیر داخلہ این نرسمہاریڈی ، اور جگدیش ریڈی وزیر تعلیم کا خطاب

آئندہ دو ماہ میں قابو ممکن ، وزیر داخلہ این نرسمہاریڈی ، اور جگدیش ریڈی وزیر تعلیم کا خطاب
حیدرآباد ۔ 25 ۔ اگست (سیاست نیوز) وزیر داخلہ این نرسمہا ریڈی نے کہا کہ آئندہ دو ماہ میں ریاست میں برقی بحران پر قابو پالیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ حکومت پڑوسی ریاستوں سے برقی خریدی کے ذریعہ بحران پر قابو پانے کے اقدامات کر رہی ہے ۔ انہوں نے کسانوں کو یقین دلایا کہ زرعی شعبہ کو درکار مناسب برقی سربراہ کی جائے گی ۔ لہذا کسانوں کو فکرمند ہونے اور احتجاج کی ضرورت نہیں۔ نرسمہا ریڈی نے الزام عائد کیا کہ سابق کانگریس حکومت کی غلط پالیسیوں کے نتیجہ میں تلنگانہ برقی قلت کا شکار ہوچکا ہے ۔ نرسمہا ریڈی آج نلگنڈہ میں 1969 ء تلنگانہ تحریک میں حصہ لینے والوں کے جلسہ عام سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوںنے کہا کہ چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ برقی بحران پر قابو پاتے ہوئے زرعی شعبہ کے علاوہ گھریلو اور صنعتی شعبہ کو بلا وقفہ برقی سربراہی حق میں ہیں۔ چھتیس گڑھ حکومت سے برقی خریدی کے سلسلہ میں بات چیت جاری ہے ۔ اس کے علاوہ نیشنل تھرمل پاور کارپوریشن سے بھی برقی کے حصول کی مساعی جاری ہے۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ حکومت تلنگانہ میں نئے برقی پراجکٹس کے آغاز کی تیاری کر رہی ہے۔ انہوں نے کے سی آر کی جانب سے شروع کئے گئے فلاحی اقدامات کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ عوام سے کئے گئے وعدہ کے مطابق کئی اسکیمات کا آغاز کیا گیا اور ان اسکیمات سے عوام مطمئن ہیں۔ نرسمہا ریڈی نے کہا کہ کانگریس اور تلگو دیشم قائدین حکومت کو بدنام کرنے کیلئے بے بنیاد الزامات عائد کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس اور تلگو دیشم دور حکومت میں راشن کارڈ کی اجرائی اور اندرماں ہاؤزنگ اسکیم میں کئی بے قاعدگیاں کی گئیں اور ٹی آر ایس حکومت انہیں بے نقاب کرے گی ۔ انہوں نے کہا کہ ان پارٹیوں کی حکومتوں نے غریبوں کی بھلائی کو نظرانداز کرتے ہوئے اسکیمات کے فوائد غیر مستحقین تک پہنچائے ہیں۔ وزیر تعلیم جگدیش ریڈی نے موجودہ برقی بحران کیلئے سابقہ حکومتوں کو ذمہ دار قرار دیا۔ انہوں نے کسانوں کو مشورہ دیا کہ وہ برقی سربراہی کے مسئلہ پر احتجاج اور سب اسٹیشنوں پر حملہ سے گریز کریں۔ حکومت اس صورتحال پر قابو پانے کے اقدامات کر رہی ہے ۔ لہذا کسانوں کو اپوزیشن جماعتوں کے بہکاوے میں نہیں آنا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ مانسون کی ناکامی کے باعث کسانوں کو کئی ایک مشکلات کا سامنا ہے اور کئی اضلاع خشک سالی کی صورتحال کا شکار ہے۔ تلنگانہ میں پہلے ہی کئی اضلاع خشک سالی سے متاثر ہیں اور ٹی آر ایس حکومت متاثرین کو امداد کی فراہمی کی کوشش کر رہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT