Sunday , January 21 2018
Home / دنیا / کانگریس سے یاہو کا خطاب امریکہ کی تذلیل : ڈیموکریٹس

کانگریس سے یاہو کا خطاب امریکہ کی تذلیل : ڈیموکریٹس

واشنگٹن ، 5 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) اسرائیلی وزیرعظم بنیامین نیتن یاہو نے امریکی کانگریس سے اپنے خطاب میں کہا کہ وہ اُس جوہری معاہدے کو تسلیم نہیں کرتے جو ایران کے ساتھ طے ہونے جا رہا ہے۔ ڈیموکریٹس نے نیتن یاہو کے خطاب کو امریکہ کی تذلیل قرار دیا ہے۔ اسرائیلی وزیراعظم کے امریکی کانگریس سے خطاب کو مختلف حلقوں کی جانب سے پہلے سے ہی متنازع

واشنگٹن ، 5 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) اسرائیلی وزیرعظم بنیامین نیتن یاہو نے امریکی کانگریس سے اپنے خطاب میں کہا کہ وہ اُس جوہری معاہدے کو تسلیم نہیں کرتے جو ایران کے ساتھ طے ہونے جا رہا ہے۔ ڈیموکریٹس نے نیتن یاہو کے خطاب کو امریکہ کی تذلیل قرار دیا ہے۔ اسرائیلی وزیراعظم کے امریکی کانگریس سے خطاب کو مختلف حلقوں کی جانب سے پہلے سے ہی متنازعہ قرار دیا جا رہا تھا۔ پیر کو اپنے خطاب میں نیتن یاہو نے امریکہ کو خبردار کیا کہ ایران کے ساتھ بات چیت ایک ناقص معاہدے کی جانب بڑھ رہی ہے:’’یہ معاہدہ جوہری تباہی کا سبب بن سکتا ہے‘‘۔

نیتن یاہو نے اپنے خطاب میں صدر اوباما کی ایران سے متعلق پالیسی کو ہر زاویے سے تنقید کا نشانہ بنایا۔ اوباما نے اسرائیلی وزیراعظم کے خطاب پر تبصرہ کرتے ہوئے صرف اتنا ہی کہا :’’ انہوں نے کوئی نئی بات نہیں کی ہے‘‘۔ امریکی صدر براک اوباما نے یہ کہتے ہوئے ان سے ملنے سے انکار کر دیا تھا کہ وہ اسرائیلی وزیراعظم کی انتخابی مہم کا حصہ نہیں بننا چاہتے۔ تاہم مختصر دورۂ امریکہ کے دوران نیتن یاہو سے کسی بھی اعلیٰ امریکی عہدہ دار نے ملاقات نہیں کی۔ ڈیموکریٹ رہنما نینسی پلوسی نے نیتن یاہو کے خطاب کو امریکہ کی ’تذلیل‘ قرار دیا ہے۔

نہوں نے کہا کہ اوباما انتظامیہ اس کوشش میں لگی ہوئی ہے کہ ایران کو جوہری ہتھیار بنانے سے روکا جائے اور اس سلسلے میں نیتن یاہو نے امریکی صلاحیتوں پر شک کیا ہے۔ اسرائیلی وزیر اعظم نے اپنے خطاب میں کہا کہ انتہائی نرم شرائط پر ایران کو جوہری سرگرمیاں ترک کرنے پر راضی کیا جا رہا ہے۔ ’’اگر ایران اس معاہدے کو قبول کر لیتا ہے، جس پر اس وقت بات چیت ہو رہی ہے، تو یہ معاہدہ ایران کو جوہری ہتھیار تیار کرنے سے روک نہیں پائے گا۔‘‘ اوباما کی جماعت ڈیموکریٹک پارٹی کے 232 ارکان میں سے تقریباً 60 نے نیتن یاہو کے خطاب کا بائیکاٹ کیا۔ اسرائیل میں 17 مارچ کو عام انتخابات ہونے والے ہیں اور امریکی کانگریس کے کچھ ارکان کی جانب سے نیتن یاہو کے خطاب کے بائیکاٹ کی وجہ سے اسرائیلی میں شدید سیاسی بحث شروع ہو سکتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT