Monday , October 22 2018
Home / اضلاع کی خبریں / کانگریس قائدین اقتدار کے اور ٹی آر ایس ترقی کی بھوکی جماعتیں

کانگریس قائدین اقتدار کے اور ٹی آر ایس ترقی کی بھوکی جماعتیں

ناگر جناساگر پروجیکٹ ‘کے بی ویملاپروجیکٹ کے جائزہ اجلاس و معائنہ سے ہریش راؤ کا خطاب

نلگنڈہ ۔ 10؍ ڈسمبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) کانگریس قائدین اقتدار کے بھوکے ہیں اور ہم ترقی کے بھوکے ہیں یکم جنوری سے 24 گھنٹے برقی سربراہی عمل میں لائی جائیگی سابق حکومتوں نے ناگرجناساگر کے کاموں کو مکمل نظرانداز کیا ۔ ٹی آر ایس سرکار نے اپنے دور اقتدار میں 1265 کروڑ کے خرچ سے 65 فیصد کاموں کو مکمل کیا ہے ماباقی 4 فیصد کاموں کا جون تک مکمل کرلیا جائیگا اودے ساگر سے بی ویملا پراجکٹ کو موٹروں کی تنصیب 15 جنوری تک کی جائیگی ۔ اندرون ماہ فبروری پروجیکٹ کے کاموں کو ہفتہ واری طورپر جائز لیتے ہوئے مکمل کرنے کی ضلع نظم و نسق کو ریاستی وزیر آبپاشی مسٹر ٹی ہریش راؤ نے ضلع کے ناگرسانگر پراجکٹ کے کاموں کا جائزہ اور لفٹ کنال میں آئی سربراہی کا عمل مکمل کرنے اور اور ضلع کے بی ویملا پراجکٹ کے کاموں کا جائزہ لینے کے صحافتی کانفرنس کو مخاطب کرتے ہوئے بتائی ۔ اس موقع پر ریاستی وزیر کے ہمراہ ریاستی وزیر برقی مسٹر جگدیش ریڈی رکن پارلیمنٹ نلگنڈہ مسٹر جی سکھیدریڈی‘ صدرنشین ضلع پریشد نالونائک‘ ضلع کلکٹر ڈاکٹر ‘رکن قانون ساز کونسل کے پربھاکر رکن اسمبلی بھاسکرراؤ نکریکل رکن اسمبلی ویریشم صدرنشین جنگلات بی نریندرریڈی تھے۔ انہو ںنے کہا کانگریس قائدین اقتدار پر فائز ہونے کے لئے تلنگانہ کو نقصان پہنچانے والی پارٹیوں سے مفاہمت کر رہی ہے ۔ حصول تلنگانہ جدوجہد کے دوران اپنے عہدوں سے مستعفی نہ ہونے اور بہانہ بازی کرنے والے قائدین ہی آج ریاست کو ترقی کی سمت گامزن کرنے میں چیف منسٹر چندرا شیکھرراؤ شب و روز کام کر رہے ہیں حکومت عوام کو ترقیاتی اور فلاحی اسکیمات کو روشناس کروانے کے اقدامات سے اپوزیشن جماعتیں بوکھلاہٹ کا شکار ہوکر عدالتوں سے رجوع ہونے کے علاوہ کئی طرح کی رکاوٹیں پیدا کر رہے ہیں ۔ اقتدار کے نشہ میں کانگریس تلنگانہ کی دشمن جماعتوں سے مفاہمت کر رہی ہے ۔ لیکن یہ قائدین کو عوام کی تائید کبھی بھی حاصل نہیں ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کے دور اقتدار بھی 2008 تا 2014 تک ناگر جنا ساگر پراجکٹ کے کاموں میں تساہلی سے کام لیا اور صرف 573 کروڑ روپئے خرچ سے 30 فیصدی کاموں کو تکمیل کیا ۔ لیکن ٹی آر ایس حکومت کے پراجکٹ کے کاموں کے لئے اندرون تین برس 1265 کروڑ ہے ۔ 65 فیصدی کاموں کو مکمل کرلیا ۔ انہوں نے اودے ساگر پانگل سے بی ویملا پراجکٹ کے کاموں کا جائزہ لیتے ہوئے 15 جنوری تک موزوں کی تنصیب عمل میں لانے کے اقدامات کرنے اور ماہ فبروری تک پراجکٹ کی تکمیل کے لئے ہر ہفتہ جائزہ لینے کی ضلع کلکٹر کو ہدایت دی اور بتایا کہ صرف آدھا کیلو میٹر کا کام باقی ہے آئندہ موسم بارش تک ایاکٹ کی تمام اراضی کو آبی سربراہی عمل میں لائی جائیگی ۔ ریاستی وزیر برقی مسٹر جگدیش ریڈی نے کہاکہ لفٹ کنال کے آخری تک کی کاشت کی اراضی کو پانی کی سربراہی عمل میں لائی جائیگی کسانوں کی خواہش کے مطابق پانی کی سبراہی کو یقینی بنایاجائیگا ۔ جدوجہد تلنگانہ کے موقع پر کوداڑ سے بالیہ تک یاترا کے دوران ٹی آر ایس سربراہ نے تیقن دیا تھا جس کی عمل آوری کی جا رہی ہے گذشتہ برس سے پینے کے پانی کی بچت کرنا ہر ایک کی ذمہ داری ہے اس موقع پر آبپاشی عہدیدار بھی موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT