Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / کانگریس میں بی سی قائدین کو نشانہ بنانے کی مذمت

کانگریس میں بی سی قائدین کو نشانہ بنانے کی مذمت

سابق صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی پنالہ لکشمیا کا بیان
حیدرآباد۔ 14 ۔جولائی 🙁 این ایس ایس ) :کانگریس میں بی سی قائدین پر حملہ کی مذمت کرتے ہوئے سابق صدر پردیش کانگریس کمیٹی پنالہ لکشمیا نے کہا کہ بعض قائدین کا یہ کہنا درست نہیں ہے کہ انہوں نے انتخابات میں کامیابیاں حاصل کی تھیں اور 2014 انتخابات میں پارٹی کی شکست کیلئے بی سیز ذمہ دار ہیں ۔ کانگریس پارٹی بی سی لیڈریں فورم کا آج یہاں ایک اجلاس منعقد ہوا جس میں بی سی قائدین کے بارے میں تبادلہ خیال کیا گیا ۔ لکشمیا نے کہا کہ بی سی فورم کی جانب سے بی سی قائدین کے تعلق سے خراب تشہیر کی مذمت کی جاتی ہے ۔ اس بات کی صاف وضاحت کرتے ہوئے کہ فورم کسی سیاسی جماعت یا کسی مخصوص طبقہ کے خلاف نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ فورم کی جانب سے بی سی قیادت کے خلاف عائد کیے جارہے الزامات کی تردید کی جائے گی ۔ سابق صدر پی سی سی مسٹر وی ہنمنت راؤ نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ سیاسی جماعتوں میں بی سیز کی کوئی شناخت نہیں ہے ۔ حالانکہ سماج میں وہ 50% سے زیادہ ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ اور بی جے پی نے بی سی ووٹس پر توجہ مرکوز کی لیکن کانگریس نے بی سیز کو خاطر خواہ ترجیح نہیں دی ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس میں بی سی ، ایس سی ، ایس ٹی اور اقلیتوں کو متحد کرنے کی ضرورت ہے ۔ تلنگانہ کانگریس فورم فار بی سی کے قائد ڈاکٹر پی ونئے کمار نے کہا کہ فورم سی ایل پی قائد کے جانا ریڈی اور صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی این اتم کمار ریڈی کے خلاف نہیں ہے ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ نے بی سیز کی امیدوں پر پانی پھیر دیا جنہوں نے سمجھا تھا کہ علحدہ تلنگانہ میں ان کا مستقبل بہتر ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر فیس ری ایمبرسمنٹ اسکیم کو کمزور کرتے ہوئے بی سیز کے ساتھ بڑی نا انصافی کررہے ہیں ۔

 

TOPPOPULARRECENT