Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / کانگریس میں عہدوں کی تقسیم کے دوران سینئیر قائدین کے ساتھ نا انصافی

کانگریس میں عہدوں کی تقسیم کے دوران سینئیر قائدین کے ساتھ نا انصافی

صدر پی سی سی اتم کمار ریڈی پر یکطرفہ فیصلہ کرنے کا الزام ، پی سدھاکر ریڈی ایم ایل سی کا ردعمل
حیدرآباد ۔ 20 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز) : کانگریس کے سینئیر قائد و رکن قانون ساز کونسل مسٹر پی سدھاکر ریڈی نے عہدوں کی تقسیم میں پارٹی کے سینئیر قائدین سے نا انصافی ہونے اور یکطرفہ فیصلے کرنے کا صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی پر الزام عائد کرتے ہوئے عاملہ تلنگانہ کانگریس اور رابطہ کمیٹی کی رکنیت سے استعفیٰ دے ریا ۔ قائد اپوزیشن مسٹر محمد علی شبیر ، مسٹر پی سدھاکر ریڈی کو سمجھانے منانے میں مصروف ہے ۔ واضح رہے کہ تین دن قبل ہی تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی اور رابطہ کمیٹی تشکیل دی گئی جس میں کونسل کے ڈپٹی فلور لیڈر اور سابق اے آئی سی سی سکریٹری مسٹر پی سدھاکر ریڈی کو عاملہ میں شامل کرنے کے علاوہ پارٹی کی فیصلہ ساز باڈی رابطہ کمیٹی میں بھی شامل کیا گیا تھا تاہم کمیٹی کی تشکیل پر اپنی ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے بطور احتجاج عاملہ اور رابطہ کمیٹی کے عہدوں سے مستعفی ہوگئے ۔ اپنے مکتوبات استعفیٰ پارٹی صدر مسز سونیا گاندھی نائب صدر راہول گاندھی صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی اتم کمار ریڈی قائد اپوزیشن اسمبلی مسٹر کے جانا ریڈی اور قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل مسٹر محمد علی شبیر کو پیش کردیا ۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلا ہے کہ انہوں نے پارٹی قیادت سے شکایت کی ہے کہ کمیٹی کی تشکیل سے قبل بالخصوص ضلع کھمم کے قائدین کے ناموں پر غور کرتے وقت انہیں یکسر نظر انداز کردیا گیا ہے ۔ صرف رکن راجیہ سبھا مسز رینوکا چودھری اور ورکنگ پریسیڈنٹ تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر ملو بٹی وکرامارک سے مشاورت کی گئی ہے وہ بھی برسوں سے پارٹی کے لیے خدمات انجام دے رہے ہیں

تاہم کیپٹن اتم کمار ریڈی نے کمیٹی کی تشکیل میں یکطرفہ فیصلہ کیا ہے ۔ جس سے ان کے جذبات کو ٹھیس پہونچی ہے ۔ اس لیے وہ پارٹی کے تمام عہدوں سے مستعفی ہورہے ہیں ۔ مسٹر پی سدھاکر ریڈی کی جانب سے پارٹی عہدوں سے دستبردار ہونے کی اطلاع ملتے ہی قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسلر مسٹر محمد علی شبیر انہیں منانے کے لیے میدان میں کود پڑے ہیں اور ان سے کہا کہ عجلت پسندی میں کوئی فیصلہ نہ کریں ان کی جو بھی شکایت ہے اس پر پارٹی قیادت ہمدردانہ غور کرے گی ۔ بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے مسٹر محمد علی شبیر نے مسٹر پی سدھاکر ریڈی کی پارٹی عہدوں سے مستعفی ہوجانے کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ سدھاکر ریڈی نے استعفی نہیں دیا ہے بلکہ مکتوب روانہ کرتے ہوئے اپنے جذبات سے واقف کرایا ہے ۔ پارٹی کے سینئیر قائد مسٹر ایم وینکٹیشور راؤ کے علاوہ دوسرے قائدین سے نا انصافی ہونے کا دعویٰ کیا ہے ۔ سینئیر قائدین کو کمیٹی میں موقع فراہم کرنے کے لیے پارٹی عہدوں سے دستبردار ہوجانے کا پیشکش کیا ہے ۔ تاہم انہوں نے استعفیٰ نہیں دیا ہے ۔ میڈیا میں جو بھی خبریں آرہی ہیں وہ بے بنیاد ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT