Saturday , November 18 2017
Home / Top Stories / کانگریس ‘ پارلیمنٹ میں کام کاج کا موقع دینا نہیں چاہتی

کانگریس ‘ پارلیمنٹ میں کام کاج کا موقع دینا نہیں چاہتی

پارٹی کا با معنی مباحث سے گریز ۔ ملک کے غریب عوام مودی کو مسیحا سمجھنے لگے ہیں۔ مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو کا اظہار خیال

نئی دہلی 18 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس اور اس کی حلیف جماعتیں نہیں چاہتیں کہ پارلیمنٹ میں کوئی کام ہو اور وہ بڑے کرنسی نوٹوں کا چلن بند کئے جانے کے مسئلہ پر ایوان میں مباحث سے فرار حاصل کر رہی ہیں۔ مرکزی وزیر ایم وینکیا نائیڈو نے یہ بات کہی اور ادعا کیا کہ اس فیصلے کے بعد ملک کے غریب عوام وزیر اعظم نریندر مودی کو اپنے مسیحا کے طور پر دیکھ رہے ہیں۔ پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں اپوزْشن جماعتوں کے احتجاج کی وجہ سے کارروائی کے متاثر ہونے کے بعد اپوزیشن کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے وزیر اطلاعات و نشریات نے کہا کہ کانگریس پارٹی کو کل راجیہ سبھا میں پرسکون کارروائی ہونے پر شدید تکلیف ہوئی ہے کیونکہ وہ ایوان میں ثمرآور مباحث کیلئے تیار نہیں ہے ۔ بڑے کرنسی نوٹوں کا چلن بند کئے جانے کے عمل کو قومی پراجیکٹ اور بڑا سماجی مسئلہ قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ریاست کے عوام کی زندگیوں پر بہتر کل کیلئے کچھ اثرات ہونگے ۔ حکومت کو عوام کو درپیش مشکلات کی فکر ہے اور وہ ان مشکلات کو حل کرنے کی کوشش کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مودی ملک میں مقبول ترین شخص ہیں اور اس فیصلے کے بعد ان کی مقبولیت میں اضافہ ہوا ہے ۔ ملک کے عوام اب مودی کو اپنے مسیحا کے طور پر دیکھ رہے ہیں۔ ہم یہ سمجھنے سے قاصر ہیں کہ کانگریس اور اس کی حلیف جماعتیں کیوں پارلیمنٹ میں ہنگامہ کر رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کا اب کہنا ہے کہ وزیر اعظم کو ایوان میں آنا چاہئے اس کے بعد ہی مباحث ہونگے ۔ پارٹی کا مطالبہ ہے کہ مشترکہ پارلیمانی پارٹی کی تحقیقات کروائی جائیں۔ یہ در اصل مسئلہ سے توجہ ہٹانے کی کوشش ہے ۔ اس کے پاس حقائق نہیں ہیں اور عوام کی رائے پارٹی کے خلاف ہوتی جا رہی ہے ۔ وہ نہیں چاہتے کہ پارلیمنٹ میں کوئی کام کاج ہو اور ایسا لگتا ہے کہ وہ اسی سمت میں کام کر رہی ہے ۔ نائیڈو نے میڈیا سے بات چیت میں اپوزیشن جماعت پر اپنے موقف سے انحراف کا الزام عائد کیا اور کہا کہ ابتداء میں اس نے مباحث سے اتفاق کیا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس قائدین محض دکھاوے کیلئے پارلیمنٹ کے باہر اس مسئلہ پر اظہار خیال کر رہے ہیں اور وہ ایوان میں بامعنی مباحث کیلئے تیار نہیں ہیں۔ بی جے پی کے ارکان نے راجیہ سبھا میں کانگریس لیڈر غلام نبی آزاد کے ریمارک پر تنقید کی جس میں انہوں نے کہا تھا کہ بڑے کرنسی نوٹوں کا چلن بند کئے جانے کے فیصلے سے اوری میں ہوئے دہشت گردانہ حملہ سے زیادہ افراد کی موت واقع ہوئی ہے اور اس کیلئے حکومت ہی ذمہ دار ہے ۔

TOPPOPULARRECENT