Saturday , December 16 2017
Home / شہر کی خبریں / کانگریس پارٹی انتشار کے دہانے پرسینئیر قائدین کو نظر انداز کرنے کی شکایات عام ، فاروق حسین کا بیان

کانگریس پارٹی انتشار کے دہانے پرسینئیر قائدین کو نظر انداز کرنے کی شکایات عام ، فاروق حسین کا بیان

حیدرآباد ۔ 12 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز) : کانگریس کے رکن قانون ساز کونسل مسٹر محمد فاروق حسین نے اے آئی سی سی جنرل سکریٹری ڈگ وجئے سنگھ سے شکایت کرتے ہوئے کہا کہ وہ وہ پارٹی پر توجہ دیں بصورت دیگر پارٹی کو بکھیرنے میں دیر نہیں لگے گی ۔ پارٹی کے سینئیر قائدین کو پارٹی میں نظر انداز کیا جارہا ہے ۔ گریٹر حیدرآباد بلدی انتخابات میں ٹکٹس فروخت کی گئی ہیں ۔ سدی پیٹ میں مقامی ہونے کے باوجود ٹکٹوں کی تقسیم اور انتخابی مہم میں انہیں نظر انداز کردیا گیا ۔ پارٹی قائد کے مکان پر طعام کے موقع پر کانگریس کے تمام سینئیر قائدین موجود تھے ۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلا ہے کہ موقع کا بھر پور فائدہ اٹھاتے ہوئے مسٹر فاروق حسین نے بتایا کہ کل ہی سدی پیٹ بلدی انتخابات کے نتائج برآمد ہوئے ہیں وہ سدی پیٹ کے مقامی ہیں ۔ تاہم انہیں امیدواروں کے انتخاب اور پارٹی کے انتخابی مہم سے منظم سازش کے تحت دور رکھا گیا ہے ۔ پارٹی میں چند ایسے قائدین ہیں جن کے ذہن صاف نہیں ہے اور ہر جگہ انہیں نظر انداز کیا جارہا ہے ۔ پارٹی پوسٹرس پر ان کی تصویر شائع کرنا بھی مناسب نہیں سمجھا جارہا ہے ۔ ضلع میدک میں مسز سنیتا لکشما ریڈی ، ڈاکٹر گیتا ریڈی ، مسٹر دامودھر راج نرسمہا ، مسٹر جگا ریڈی اور وائی ایس آر کانگریس پارٹی سے کانگریس میں شامل ہونے والے شرون کمار ریڈی کو پارٹی قیادت کی جانب سے ذمہ داریاں سونپی جارہی ہیں ۔ یہ قائدین انہیں نظر انداز کررہے ہیں ۔ مقامی قائد ہونے کے باوجود سدی پیٹ بلدی انتخابات سے انہیں دور رکھا گیا ۔ ایم ایل سی انتخابات میں بھی ان سے کوئی مشورہ نہیں کیا گیا ان قائدین کی جانب سے جس کو امیدوار بنایا گیا وہ پرچہ نامزدگی داخل کرنے کے بعد ٹی آر ایس میں شامل ہوگیا ۔ ٹی آر ایس کے کامیاب ہونے والے امیدوار نے 5 کروڑ میں سودے بازی ہونے کا دعویٰ کیا ہے ۔ یہ پانچ کروڑ پارٹی فنڈز میں گئے ہیں یا قائدین میں تقسیم ہوئے ہیں ۔ گریٹر حیدرآباد میں ٹکٹس فروخت کرنے کی شکایت عام ہیں ۔ اہم قائدین کو نظر انداز کردیا گیا ۔ ورنگل ، کھمم ، بلدی انتخابات اور نارائن کھیڑ اسمبلی انتخابات میں بھی پارٹی امیدواروں کی شکست ہوئی ہے تاہم پارٹی کی جانب سے کوئی اجلاس طلب کر کے شکست کا جائزہ نہیں لایا گیا ۔ اگر یہی حال رہا تو پارٹی کمزور ہوجائے گی ۔ پارٹی میں چند قائدین کی اجارہ داری چل رہی ہے ۔ پارٹی میں صرف 2 ہی مسلم قائدین رہ گئے ہیں ۔ اگر ان کے ساتھ یہی سلوک روا رکھا گیا تو مستقبل کے بارے میں غور کرنے کے علاوہ ان کے پاس کوئی چارہ نہیں رہے گا ۔ ڈگ وجئے سنگھ نے کہا کہ وہ بہت جلد ایک اجلاس طلب کرتے ہوئے حالت کا جائزہ لیں گے ۔ ڈاکٹر گیتا ریڈی نے مداخلت کرتے ہوئے دریافت کیا 5 کروڑ روپئے کون لیے اس کا نام بتائیے ۔ ہنمنت راؤ نے کہا کہ محمد فاروق حسین نے آج آپ کے سامنے اپنے دل کی بھڑاس نکال لی ہے ۔ ایسے کئی قائدین ہیں جو اپنی بات کہنا چاہتے ہیں آپ بہت جلد جائزہ اجلاس طلب کریں ورنہ بہت دیر ہوجائے گی ۔۔

TOPPOPULARRECENT