Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / کانگریس پارٹی چیف منسٹر کے سی آر کی دھمکیوں سے بے خوف

کانگریس پارٹی چیف منسٹر کے سی آر کی دھمکیوں سے بے خوف

راجیوگاندھی کی برسی تقریب، محمد علی شبیر قائد اپوزیشن کونسل کا خطاب

حیدرآباد ۔ 21 مئی (سیاست نیوز) قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل مسٹر محمد علی شبیر نے کہا کہ اپوزیشن کا تعمیری رول ادا کرنے میں کانگریس پارٹی کبھی سمجھوتہ نہیں کرے گی اور نہ ہی چیف منسٹر کے سی آر کی دھمکیوں سے ڈرے گی۔ کانگریس کے رکن راجیہ سبھا مسٹر وی ہنمنت راؤ کی جانب سے آنجہانی راجیو گاندھی کی 25 ویں برسی کے موقع پر مجسمہ راجیو گاندھی سوماجی گوڑہ پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر محمد علی شبیر نے کہا کہ چیف منسٹر کی دھمکیوں کا کانگریس پر کوئی اثر نہیں ہوگا۔ کانگریس پارٹی مزید شدت کے ساتھ عوامی مسائل کو اٹھائے گی۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس نے تحریک آزادی میںحصہ نہیں لیا اور نہ ہی علحدہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل میں اس کا کوئی رول ہے۔ ٹی آر ایس حکومت کی کارکردگی مایوس کن ہے اور حکومت تمام محاذوں میں ناکام ہوچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر عوامی مسائل اٹھانے پر گرفتار کیا جاتا ہے تو کانگریس قائدین جیل جانے میں فخر محسوس کریں گے۔ کانگریس پارٹی کا کیڈر عوامی مسائل پر حکمران ٹی آر یس سے آر پار کی لڑائی لڑنے کیلئے تیار ہے۔ کانگریس پارٹی انقلابی شاعر بسمل عازم آبادی کے اصولوں پر اتفاق رکھتی ہے جنہوں نے کہا تھا
سرفروشی کی تمنا اب ہمارے دل میں ہے
دیکھنا ہے زور کتنا بازوئے قاتل میں ہے
عوامی مسائل کو حل کرانے کیلئے کانگریس قائدین و کارکن ہر قربانی دینے کو تیار ہے۔ مسٹر محمد علی شبیر نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت اپوزیشن کی آواز دبانے کی کوشش کررہی ہے۔ کانگریس قائدین کی جانب سے تلنگانہ حکومت کی ناکامیوں کو اجاگر کرنے پر چیف منسٹر بوکھلاہٹ کا شکار ہے۔ عوام سے ہونے والی ناانصافیوں کا کانگریس پارٹی تماشہ نہیں دیکھے گی۔ کانگریس پارٹی اپوزیشن کا تعمیری رول ادا کرتے ہوئے حکومت کی ناکامیوں کا پردہ فاش کرتے رہے گی اور اچھے کاموں پر حکومت کی تائید بھی کرے گی۔ انہوں نے آنجہانی راجیو گاندھی کی خدمات کو ناقابل فراموش قرار دیا۔ آنجہانی قائد ویژن رکھنے والی شخصیت تھی۔ انہوں نے ہندوستان کو دنیا کے ترقی یافتہ ممالک کی فہرست میں شمار کرنے کی منصوبہ بندی کرتے ہوئے خدمات انجام دی ہے۔ نوجوانوں کو 18 سال کی عمر میں ووٹ دینے کا اختیار دیا مقامی اداروں میں خواتین کو تحفظات فراہم کئے۔

TOPPOPULARRECENT