کانگریس پارٹی ڈرامہ کمپنی :راجندر

عوامی مسائل سے زیادہ اقتدار کی فکر، چیف منسٹر کے عہدہ کیلئے آپس میں لڑائی
حیدرآباد ۔ 15 ۔ مئی (سیاست نیوز) وزیر فینانس ای راجندر نے الزام عائد کیا کہ کانگریس پارٹی کو عوام کی تکالیف اور ان کے مسائل سے زیادہ اقتدار کی فکر ہے۔ تلنگانہ میں اقتدار حاصل کرنے کیلئے کانگریس پارٹی بس یاترا اور دیگر سیاسی حربے استعمال کر رہی ہے۔ وزیر فینانس نے کانگریس پارٹی کو ڈرامہ کمپنی سے تعبیر کیا اور کہا کہ چیف منسٹر کے عہدہ کیلئے قائدین ایک دوسرے پر سبقت لے جانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ وزیر فینانس نے کہا کہ عوام کانگریس پارٹی پر ہرگز بھروسہ نہیں کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ رعیتو بندھو اسکیم پر کانگریس پارٹی بے بنیاد الزامات عائد کر رہی ہے ۔ حالانکہ دیہی سطح پر کانگریس کے قائدین اسکیم کی تعریف کر رہے ہیں۔ اس اسکیم سے بلا لحاظ سیاسی وابستگی تمام کسانوں کو فائدہ پہنچ رہا ہے۔ انہوں نے کانگریس قائدین کو چیلنج کیا کہ وہ اسکیم کی مخالفت کر کے دکھائیں ، انہیں عوامی ناراضگی کا سامنا کرنا پڑے گا۔ وزیر فینانس نے کہا کہ رعیتو بندھو اسکیم کے تحت کسانوں کو 1200 کروڑ روپئے تقسیم کئے جارہے ہیں۔ مکمل شفافیت کے ساتھ عمل آوری جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ متحدہ آندھراپردیش میں کسان مسائل کا شکار تھے اور اس وقت کی حکومتوں نے مسائل کو نظر انداز کردیا تھا ۔ تلنگانہ کی تشکیل کے بعد کے سی آر نے کسانوں کو خوشحال بنادیا اور تلنگانہ وہ پہلی ریاست ہے جہاں 24 گھنٹے مفت برقی سربراہی کی جارہی ہے۔ ای راجندر نے اتم کمار ریڈی کے اس الزام کو مسترد کردیا کہ رعیتو بندھو اسکیم انتخابی حربہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ تین برسوں کے دوران ٹی آر ایس حکومت نے زرعی شعبہ کے لئے کئی اسکیمات کا آغاز کیا ۔ 17 ہزار کروڑ کے قرضہ جات معاف کئے گئے ۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ 60 برسوں میں کسی بھی حکومت نے زرعی شعبہ کو 24 گھنٹے برقی سربراہ نہیں کی ۔ یہ اعزاز کے سی آر حکومت کو حاصل ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس قائدین چونکہ بدعنوانیوں میں ملوث رہ چکے ہیں۔ لہذا انہیں ٹی آر ایس کی اسکیمات میں بدعنوانیاں دکھائی جارہی ہیں۔ جس رنگ کی عینک لگائی جائے دنیا اسی رنگ کی دکھائی دیتی ہے۔ وزیر فینانس نے عوام سے اپیل کی کہ وہ اپوزیشن کے بہکاوے میں آئے بغیر حکومت کی اسکیمات سے بہتر استفادہ کریں۔

TOPPOPULARRECENT